مرکز نے سپریم کورٹ میں داخل حلف نامہ کو ہولڈ کیا ، روہنگیا مسلمانوں کو بتایا تھا قومی سلامتی کیلئے خطرہ

Sep 14, 2017 06:24 PM IST | Updated on: Sep 14, 2017 11:55 PM IST

نئی دہلی : مرکزی حکومت نے ہندوستان میں رہنے والے روہنگیا مسلمانوں سے متعلق سپریم کورٹ میں داخل اپنے حلف نامہ کو ہولڈ پر ڈال دیا ہے۔ مودی حکومت کا کہنا ہے کہ حلف نامہ میں کچھ تبدیلی کی جائے گی ۔  قبل ازیں مودی حکومت نے روہنگیا مسلمانوں کو قومی سلامتی کے لئے خطرہ قرار دیتے ہوئے کہا تھا کہ انہیں یہاں نہیں رہنے دیا جاسکتا۔ مرکزی حکومت نے عدالت عظمی میں آج دائر حلف نامہ میں کہا ہے کہ روہنگیا مسلمان ہندوستان کی سلامتی کے لئے خطرہ ہیں۔حکومت نے مزید کہا کہ کچھ روہنگیامسلمانوں کے تار دہشت گردتنظیموں سے بھی جڑے ہوئے ہیں اور اس لئے انہیں یہاں رہنے کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔

مرکز نے یہ واضح کیا ہے کہ روہنگیا غیر قانونی طریقے سے رہنے والے پناہ گزین ہیں۔ اس لئے ان کے پاس کوئی آئینی حق نہیں ہے۔ حکومت کا یہ جواب دو روہنگیا مسلمانوں کی عرضی پر نوٹس کے جواب میں آیا ہے۔ ان عرضی گذاروں کی طرف سے معروف وکیل پرشانت بھوشن نے جرح کی تھی۔ جس کے بعد عدالت نے مرکز کو نوٹس جاری کرکے جواب طلب کیا تھا۔

مرکز نے سپریم کورٹ میں داخل حلف نامہ کو ہولڈ کیا ، روہنگیا مسلمانوں کو بتایا تھا قومی سلامتی کیلئے خطرہ

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز