صدارتی انتخابات کیلئے بی جے پی کی تیاری شروع ، وزیر اعظم مودی نے ادھو کو ڈنر پر بلایا

بی جے پی کے ایک مرکزی رہنما نے دعوی کیا کہ صدر کے عہدہ کے لیے بی جے پی کے سینئر لیڈر لال کرشن اڈوانی، لوک سبھا اسپیکر سمترا مہاجن، وزیر خارجہ سشما سوراج اور جھارکھنڈ کی گورنر دروپدي مرمو ممکنہ امیدواروں میں ہیں

Mar 26, 2017 02:52 PM IST | Updated on: Mar 26, 2017 02:52 PM IST

نئی دہلی : صدارتی انتخابات کی تیاری میں بی جے پی مصروف ہوگئی ہے۔ شیوسینا کے صدر ادھو ٹھاکرے کو اسی کے پیش نظر وزیر اعظم مودی نے ڈنر پر مدعو کیا ہے۔

وزیر اعظم کی جانب سے اگلے ہفتے این ڈی اے کے اتحادی جماعتوں کے لئے عشائیہ کا اہتمام کیا گیا ہے۔ شیوسینا کے ذرائع نے کہا کہ 'مودی نے گڑي پڑوا کے بعد ایک میٹنگ بلائی ہے اور زیادہ امکان ہے کہ یہ 29 مارچ کو ہوگی۔ ادھو ٹھاکرے میٹنگ میں موجود رہیں گے۔ 'شیوسینا کے ایک لیڈر نے کہا کہ ' یہ مودی جی کی ڈنر دپلومیسی ہے ، جس میں وہ صدارتی انتخابات کے لئے کسی نام پر اتفاق رائے حاصل کرنے کی کوشش کریں گے۔

صدارتی انتخابات کیلئے بی جے پی کی تیاری شروع ، وزیر اعظم مودی نے ادھو کو ڈنر پر بلایا

واضح رہے ہو کہ اس سال جولائی میں صدارتی انتخابات ہونے کا امکان ہے۔ اس درمیان بی جے پی کے ایک مرکزی رہنما نے دعوی کیا کہ صدر کے عہدہ کے لیے بی جے پی کے سینئر لیڈر لال کرشن اڈوانی، لوک سبھا اسپیکر سمترا مہاجن، وزیر خارجہ سشما سوراج اور جھارکھنڈ کی گورنر دروپدي مرمو ممکنہ امیدواروں میں ہیں۔

صدر پرنب مکھرجی نے 25 جولائی 2012 کو عہدہ سنبھالا تھا اور اگلا صدر 25 جولائی سے پہلے منتخب ہو جانا چاہئے۔ لوک سبھا، راجیہ سبھا اور مختلف ریاستوں کی اسمبلیوں کے تمام اراکین صدارتی انتخابات میں ووٹر ہوتے ہیں۔

Loading...

شیوسینا ذرائع نے کہا کہ 'بھلے ہی بی جے پی کو لوک سبھا میں اکثریت حاصل ہے اور وہ کئی ریاستوں میں اقتدار میں ہے، لیکن وہ ساتھی جماعتوں کو شکایت کا کوئی موقع نہیں دینا چاہتی ، اسی لئے مودی جی نے ڈنر کا اہتمام کیا ہے۔

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز