ایکسکلوزیو: ایم ایس دھونی کے کپتانی چھوڑنے کی کہانی، ان 12 گھنٹوں میں یہ-یہ ہوا؟

Jan 05, 2017 09:41 AM IST | Updated on: Jan 05, 2017 09:41 AM IST

اسپورٹس ڈیسک۔ ایم ایس دھونی کا کپتانی چھوڑنا طوفان کا وہ جھونکا ہے، جسے انڈین کرکٹ میں ہمیشہ یاد کیا جائے گا۔ دھونی کا یہ فیصلہ بھی ٹیسٹ کی کپتانی چھوڑنے جیسا ہی تھا۔ فرق صرف اتنا تھا کہ وہ فیصلہ کپتانی کے ساتھ ساتھ ٹیسٹ سے ریٹائرمنٹ کا بھی تھا اور اسے آسٹریلیا میں لیا گیا تھا۔ ناگ پور فیصلہ یعنی، ون ڈے اور ٹی -20 کپتانی چھوڑنے کا انگلینڈ کے خلاف سیریز کے لئے ون ڈے اور ٹی -20 ٹیم سلیكشن سے ٹھیک پہلے لیا گیا۔ اب ٹیم کو ٹیم انگلینڈ کے خلاف ون ڈے اور ٹی -20 سیریز کے لئے چنی جاتی، اس سے پہلے ہی دھونی نے کپتانی چھوڑ کر سب کو چونکا دیا۔

دھونی کو اس پریشر کا پہلے سے تھا اندازہ

ایکسکلوزیو: ایم ایس دھونی کے کپتانی چھوڑنے کی کہانی، ان 12 گھنٹوں میں یہ-یہ ہوا؟

حالات کے عین مطابق اندازہ لگانے میں ماہر دھونی کو اس کا اندازہ دو ہفتے پہلے ہی لگ چکا تھا۔ انہوں نے بی سی سی آئی کے سربراہ کے طور پر انوراگ ٹھاکر کو ہٹائے جانے کا اندازہ لگا لیا تھا۔ ایسے میں سوربھ گنگولی آئیں یا پھر کوئی اور سب سے پہلے کپتانی میں تبدیلی ہوتی۔ اس کا سب سے بڑا سبب یہ ہے کہ گنگولی سمیت کئی بڑے وراٹ کوہلی کو تمام فارمیٹ میں کپتان بنائے جانے کی وکالت کر رہے تھے۔ ایسے میں دھونی نے خود ہی راستہ چننا بہتر سمجھا۔

پرساد سے دیر تک جاری رہی میٹنگ

نام نہیں شائع کرنے کی شرط پر بی سی سی آئی کے ایک افسر نے بتایا کہ ایم ایس دھونی گزشتہ چار دنوں سے سلیكٹر ایم کے پرساد کے رابطے میں تھے۔ وہ دونوں ناگپور میں ہی تھے جہاں جھارکھنڈ اور گجرات کے درمیان رنجی کا سیمی فائنل مقابلہ ہو رہا تھا۔ بدھ کو بھی دھونی ہوٹل سے نکل کر جب وی سی اے سول لائنس اسٹیڈیم پہنچے تو وہاں ان کی سلكٹرس سے کافی گہری میٹنگ جاری رہی۔

ادھر سلیكشن کا اعلان، ادھر دھونی کا فیصلہ

ذرائع کی مانیں تو دھونی نے یہیں اپنے فیصلے سے سلیكٹرس کو آگاہ کر دیا تھا۔ اس کے بعد وہ شام کو قریب 5:00 بجے سے 6 بجے تک نیٹ پریکٹس کرتے نظر آئے۔ بتا دیں کہ دھونی کے کپتانی چھوڑنے کی ریلیز سے کچھ وقت پہلے ہی بی سی سی آئی نے انگلینڈ کے خلاف ہونے والی ون ڈے اور ٹی -20 سیریز کے لئے ٹیم کا اعلان 6 جنوری کو کرنے کی ریلیز جاری کی تھی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز