الور واقعہ پر نقوی کا بیان ، مجرم ، قاتل اور غنڈے کو ہندو اور مسلمان کی نظر سے نہیں دیکھا جانا چاہئے

لور میں گئو رکشکوں کی پٹائی سے ایک مسلم شخص کی موت پر پارلیمنٹ میں گزشتہ روز لاعلمی کا اظہار کرنے والے اقلیتی امور کے وزیر مختار عباس نقوی نے آج راجیہ سبھا میں اس واقعہ پر بیان دیا۔

Apr 07, 2017 12:26 PM IST | Updated on: Apr 07, 2017 12:52 PM IST

نئی دہلی : الور میں گئو رکشکوں کی پٹائی سے ایک مسلم شخص کی موت پر پارلیمنٹ میں گزشتہ روز لاعلمی کا اظہار کرنے والے اقلیتی امور کے وزیر مختار عباس نقوی نے آج راجیہ سبھا میں اس واقعہ پر بیان دیا۔ انہوں نے کہا کہ مجرم ، قاتل ، غنڈہ اور بدمعاش کو ہندو اور مسلمان کی نظر سے نہیں دیکھا جانا چاہئے ، مجرم صرف مجرم ہی ہوتا ہے۔ ساتھ ہی ساتھ مختار عباس نقوی نے یہ بھی کہا کہ وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ پیر کو اس معاملہ پر اپنا بیان دیں گے۔

خیال رہے کہ گزشتہ روز مختار عباس نقوی نے ایسے کسی واقعہ کے ہونے سے انکار کیا تھا اور اخبارات کی رپورٹ کو غلط قرار دیا تھا۔مسٹر نقوی نے کہا تھا کہ یہ ایک حساس معاملہ ہے لیکن ایسا کوئی واقعہ پیش نہیں آیا۔ میڈیا نے جو خبر دی اس کی ریاستی حکومت نے تردید کی ہے۔ کانگریس سمیت اپوزیشن پارٹیوں کی ہنگامہ آرائی پر انہوں نے کہا تھا کہ ہم لوگ اس ایوان میں اس طرح ہنگامہ کرکے کیا پیغام دینا چاہ رہے ہیں کہ ہم گائے کو ذبح کرنے کی حمایت کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم اس طرح کی لاقانونیت کو منصفانہ قرار نہیں دے سکتے۔

الور واقعہ پر نقوی کا بیان ، مجرم ، قاتل اور غنڈے کو ہندو اور مسلمان کی نظر سے نہیں دیکھا جانا چاہئے

فائل فوٹو

نقوی کے بیان پر کانگریس کے اراکین ’جھوٹ بولنا بند کرو‘ کے نعرے لگانے لگے اور غلام نبی آزاد نے کہا کہ وزیر کو واردات کی اطلاع تک نہیں ہے ، جبکہ واشنگٹن ٹائمز نے بھی اس واقعہ کی خبر دی ہے۔ تاہم مسٹر کوریئن نے معاملہ رفع دفع کرنے کی کوشش کی ، تو اپوزیشن اراکین نے انہیں بولنے نہیں دیا ، جس کے بعد مسٹر کوریئن نے کہا کہ اگر یہ واقعہ پیش آیا ہے تو سنگین بات ہے اور نہ ہوا ہو تو مزید سنگین بات ہے۔ مسٹر کوریئن نے مسٹر نقوی سے کہا تھا کہ وزیر داخلہ کو ایوان کی بات سے آگاہ کرائیں اور انہیں کہیں کہ وہ اس واقعہ کے بارے میں ایک رپورٹ ایوان میں پیش کریں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز