نقوی کاحج انتظامات میں بچولیوں کے جال کو توڑدینے کے عزم کا اظہار ، کہا : سنجیدگی سے کام کررہی مودی حکومت

حج انتظامات کو بدعنوانیوں سے پاک کرنے کے عزم کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ حاجیوں کے لئے بلڈنگیں کرائے پر لینے کے معاملے میں بچولیوں کا بہت بڑا جال ہے

May 11, 2017 07:44 PM IST | Updated on: May 11, 2017 07:44 PM IST

نئی دہلی: اقلیتی امور کے مرکزی وزیر مختار عباس نقوی نے حج کے انتظامات میں بچولیوں کے جال کو توڑ دینے کے پختہ ہ عزم کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ حکومت حج کے انتظام و انصرام کو شفاف بنانے اور اس کی خامیوں کو دور کرنے کے لئے پوری سنجیدگی کے ساتھ کام کررہی ہے۔ مسٹر نقوی آج یہاں 32 ویں آل انڈیا حج کانفرنس سے خطاب کررہے تھے۔انہوں نے حج انتظامات کو بدعنوانیوں سے پاک کرنے کے عزم کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ حاجیوں کے لئے بلڈنگیں کرائے پر لینے کے معاملے میں بچولیوں کا بہت بڑا جال ہے ، ہم حج پروسیس کو بچولیوں کے جال سے پاک کردیں گے ، کیوں کہ اس کی وجہ سے بہت گڑبڑیاں ہوتی ہیں ۔انہوں نے کہا کہ ہم نے متعلقہ افسران کو ہدایت دی ہے کہ صرف ایسی بلڈنگیں ہی کرائے پر لی جائیں، جنہیں بلڈنگ سلیکشن کمیٹی نے منظوری دی ہو۔

انہوں نے اسی کے ساتھ ہندوستانی حاجیوں کے لئے مکہ مکرمہ میں بلڈنگیں لینے کے معاملے میں کسی بھی طرح کی گڑبڑی میں ملوث افراد کے خلاف سخت کارروائی کا عندیہ دیتے ہوئے کہا کہ اس معاملے میں کسی بھی طرح کی بدعنوانی کے لئے قونصل جنرل کو ذمہ دار ٹھہرایا جائے گا۔ خیال رہے کہ مکہ مکرمہ میں رہائش کے معاملے میں حاجیوں کی مستقل شکایات رہی ہے۔ تاہم جدہ میں ہندوستانی قونصل جنرل نور الرحمان شیخ نے دعوی کیا کہ اب حالات بدل چکے ہیں اور ہم حاجیوں کے لئے صرف بہترین اور آرام دہ مکانات کرائے پر لیتے ہیں۔

نقوی کاحج انتظامات میں بچولیوں کے جال کو توڑدینے کے عزم کا اظہار ، کہا : سنجیدگی سے کام کررہی مودی حکومت

کانفرنس میں ملک بھر کی تقریباً تمام ریاستوں کی حج کمیٹیوں کے چیئرمین اور حج افسران شریک تھے۔شرکاء نے اس بات پر سخت اعتراض کیا کہ ایر انڈیا نے اس سال روایت کے برخلاف سنٹرل حج کمیٹی سے صلاح و مشورہ کئے بغیر ہی ہوائی جہاز کے کرایوں کا یک طرفہ اعلان کردیا ۔ شرکاء نے اس ضمن میں ایک شکایتی میمورنڈم وزیر اعظم اور شہری ہوابازی کے وزیر کو پیش کرنے کا اعلان کرتے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ ہوائی جہاز کے کرایوں پر نظر ثانی کرے۔ خیال رہے کہ ایر انڈیا نے ممبئی سے جدہ کا کرایہ 48ہزار روپے اور گوہاٹی سے جدہ کا کرایہ ایک لاکھ بارہ ہزار روپے کے قریب بتایا ہے۔ شرکاء نے اس بات پر بھی سخت اعتراض کیا کہ حالانکہ سپریم کورٹ نے 2022 تک سبسڈی کو مرحلہ وار ختم کرنے کی ہدایت دی ہے تاہم حکومت اس سلسلے میں بھی من مانی کررہی ہے اور جہاں اس نے پچھلے سال 400 کروڑ روپے کی سبسڈی دی تھی اس سال اسے گھٹا کر 200کروڑ روپے کردی ہے۔اس کی وجہ سے حج کمیٹی آف انڈیا پر دباو کافی بڑھ گیا ہے۔

مرکزی وزیر مسٹر نقوی نے بتایاکہ سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد نئی حج پالیسی تیار کرنے کے لئے ایک اعلی سطحی کمیٹی قائم کی گئی ہے ۔ کمیٹی نے حج سے وابستہ تمام فریقین کے ساتھ صلاح و مشورہ کیا ہے اور جلد ہی اپنی سفارشات پیش کردے گی۔مسٹر نقوی نے مکہ مکرمہ میں ہندوستانی حاجیوں کے لئے مستقبل بنیاد پر رہائش گاہیں لینے کو غیر عملی قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ معاملہ ایسے لوگ اٹھارہے ہیں جن کا ذاتی مفاد ہے۔ حالانکہ سعودی حکومت نے اس معاملے میں کسی طرح کی ضمانت دینے سے انکار کردیا ہے۔

Loading...

مسٹر نقوی نے کہا کہ حکومت پانی کے جہاز کے ذریعہ عازمین حج کو بھیجنے کے متبادل پر سنجیدگی سے غور کررہی ہے ۔ اس سلسلے میں جہاز رانی کے وزیر نتن گڈکر ی کے علاوہ ہندوستان میں سعودی سفیر کے ساتھ بھی بات چیت ہوئی ہے۔ انہوں نے دعوی کیا کہ جدید ٹکنالوجی اور سہولیات کے نتیجے میں پانی کے جہاز کے ذریعہ ممبئی سے جدہ تک پانی کے جہاز کے ذریعہ دو سے ڈھائی دن میں سفر مکمل ہوجائے گا ۔ اس سے کم پیسے والے مسلمان بھی حج پرجانے کی تمنا پوری کرسکیں گے۔

مسٹر نقوی نے اس سال عازمین حج کا کوٹہ بڑھانے پر سعودی حکومت کا شکریہ ادا کیا۔ خیال رہے کہ اس سال ہندوستان سے ایک لاکھ ستر ہزار مسلمان حج پر جاسکیں گے۔ ان میں سے ایک لاکھ تیس ہزار حج کمیٹی آف انڈیا کے ذریعہ اور بقیہ پرائیوٹ ٹو رآپریٹیروں کے توسط سے جائیں گے۔ جب یو این آئی نے سعودی عرب میں ہندوستانی سفیر احمد جاوید سے پوچھا کہ تعداد میں اسے اضافہ کیوں کر کہا جاسکتا جبکہ پہلے بھی اتنی ہی تعداد میں ہندوستانی حج پر جاتے تھے تو انہوں نے مسکراتے ہوئے کہا کہ’ پچھلے سال کے مقابلے میں تواضافہ ہوا ہی ہے۔‘

قبل ازیں حج کمیٹی آف انڈیا کے چےئرمین اور ممبر پارلیمنٹ محبو ب علی قیصر نے بتایا کہ اس سال تقریباً پانچ لاکھ لوگوں نے حج کے لئے درخواستیں دی اور خاص بات یہ رہی کہ تقریباً سوالا کھ لوگوں نے ڈیجیٹل طریقہ سے فارم جمع کیا۔ یہ ایک بڑا انقلاب ہے۔ حج کمیٹی آف انڈیا کے چیف ایگزیکیوٹیو افسر عطاء الرحمان نے ہندوستان میں حج کی تیاریوں کے سلسلے میں جب کہ نورالرحمان شیخ نے سعودی عرب میں ہندوستان کی طرف سے عازمین حج کے لئے انتظامات کے متعلق تفصیلات بتائیں۔ مسٹر رحمان شیخ نے بتایا کہ اس مرتبہ گرین زمرے میں لوگوں کو اپنی رہائش گاہوں پر کھانا پکانے کی اجازت نہیں ہوگی۔

کانفرنس سے ممبر پارلیمنٹ سلطان احمد اور شیخ جینا کے علاوہ اترپردیش کے وزیر برائے اقلیتی امور محسن رضا، کرناٹک کے وزیر مسٹر روشن بیگ، گجرات کے مسٹر محمد علی قادری، مہاراشٹر کے ابراہیم شیخ راجستھان کے عبدالعزیز اور دیگر افراد نے بھی خطاب کیا۔ ریاستی حج کمیٹیوں کے چےئرمین کی تجویز تھی کہ خادم الحجاج کے نام پربھیجے جانے والے سرکاری ملازمین کی تعداد نصف کردی جائے اور بقیہ تعداد مذہبی علماء سے پورا کی جائے جو حاجیوں صحیح طریقے سے حج کرنے میں رہنمائی بھی کرسکیں گے۔

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز