یوگی آدتیہ ناتھ کی کابینہ میں شامل ہونے والے محسن رضا بالآخر ہیں کون؟

Mar 20, 2017 11:08 AM IST | Updated on: Mar 20, 2017 11:10 AM IST

لکھنئو۔ آدتیہ ناتھ یوگی نے یوپی کے 21 ویں وزیر اعلی کا عہدہ سنبھال لیا ہے۔ انہوں نے اپنی کابینہ میں صرف ایک مسلم چہرے کو شامل کیا ہے، وہ ہیں محسن رضا۔ انہوں نے مملکتی وزیر کے طور پر حلف لیا۔ محسن رضا کے بارے میں کیا یہ بھی پتہ ہے لوگوں کو کہ یہ ایک کرکٹر بھی ہیں۔

کابینہ میں واحد مسلم چہرہ محسن رضا رنجی ٹرافی کرکٹ میچ کھیل چکے ہیں۔ بی جے پی نے اس بار کے اسمبلی انتخابات میں ایک بھی مسلمان کو امیدوار نہیں بنایا تھا۔ رضا کو کابینہ میں شامل کر یوگی نے یوپی کی مسلم آبادی کا اعتماد بحال کرنے کی کوشش کی ہے کہ ان کی بھی شرکت اور اہمیت کو حکومت توجہ دے گی۔ محسن ابھی یوپی اسمبلی کے کسی بھی ایوان کے رکن نہیں ہیں۔ انہیں چھ ماہ کے اندر کسی نہ کسی ایوان کے ذریعے اسمبلی میں شامل ہونا ہوگا۔

یوگی آدتیہ ناتھ کی کابینہ میں شامل ہونے والے محسن رضا بالآخر ہیں کون؟

محسن رضا کو یوگی کابینہ میں شامل کئے جانے پر ایس پی لیڈر اعظم خاں نے کہا، یہ بی جے پی کے تشٹی کرن کا آغاز ہے۔ ابھی تو بہت کچھ ہونا باقی ہے۔

آئیے جانیے کون ہیں محسن رضا؟

محسن رضا بنیادی طور سے لکھنؤ کے رہنے والے ہیں۔ محسن 2013 میں بی جے پی میں شامل ہوئے۔ ابھی وہ اترپردیش بی جے پی کے ترجمان ہیں اور ٹی وی پر بی جے پی کا جانا مانا چہرہ کہے جاتے ہیں۔ رضا ابھی کسی بھی ایوان کے رکن نہیں ہیں۔ آئین کے مطابق 6 ماہ کے اندر انہیں اسمبلی کے کسی ایک ایوان کا رکن بننا ہوگا۔

محسن نے لکھنؤ کے ہی گورنمنٹ جوبلی انٹر کالج سے تعلیم حاصل کی ہے۔ اس کے علاوہ رضا اتر پردیش کی جانب سے کئی رنجی میچ بھی کھیل چکے ہیں۔ محسن یوگی حکومت میں دوسرے ایسے وزیر ہیں جو کرکٹر رہ چکے ہیں۔ ان کے علاوہ سابق کرکٹر چیتن چوہان کو بھی کابینہ وزیر بنایا گیا ہے۔

محسن کے بھائی عرشی رضا مقامی کانگریسی لیڈر ہیں، تاہم محسن کا کہنا ہے کہ وہ دونوں ایک دوسرے کے لئے 'مرنے کو بھی تیار' رہتے ہیں اور گھر میں سیاست کے بارے میں بات نہیں کرتے۔ محسن رضا ایس پی بانی ملائم سنگھ یادو کے بڑے سخت ناقد رہے ہیں۔ رضا نے کئی عوامی فورموں پر ملائم پر مسلمانوں کا اپنے سیاسی فائدے کے لئے استعمال کرنے کا الزام لگایا ہے۔

محسن نے منی پور کی گورنر نجمہ ہپت اللہ کے خاندان کی بیٹی فوزیہ ساروات فاطمہ سے نکاح کیا ہے۔ رضا ایم آر ایف فاؤنڈیشن چنئی سے بھی منسلک رہے۔ انہوں نے انٹرٹینمنٹ انڈسٹری میں بھی اپنی قسمت آزمائی۔ وہ 1995 میں پرنس لکھنؤ بھی منتخب ہوئے۔ انہوں نے دوردرشن کے مشہور سیریل نیم کے پیڑ میں بھی کام کیا۔

رضا خود اناؤ کے ایک زمیندار خاندان سے آتے ہیں جوکہ کانگریس کے زیادہ قریب مانا جاتا ہے۔ 1999 میں خود رضا بھی كانگریس اسپورٹس سیل کے صدر بھی بنائے گئے تھے۔ لیکن انہیں کانگریس میں مزہ نہیں آیا۔ انہوں نے کانگریس کو چھوڑ کر لوک سبھا انتخابات 2014 سے پہلے بی جے پی جوائن کر لی۔ بہت جلد انہوں نے راج ناتھ سنگھ اور ان کے بیٹے پنکج سنگھ کو متاثر کیا اور گزشتہ سال بی جے پی کے ترجمان بن گئے۔

 

 

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز