یوپی : مسلم کنبہ کے ارکان کے ساتھ ٹرین میں مار پیٹ ، نقدی اور زیورات بھی چھینے ، تین افراد حراست میں

Jul 14, 2017 08:13 PM IST | Updated on: Jul 14, 2017 08:56 PM IST

فرخ آباد : اتر پردیش کے فرخ آباد ضلع میں شکوہ آباد - كاس گنج مسافر ٹرین میں سوار 10 لوگوں کے ساتھ جم کر مار پیٹ اور لوٹ مار کی گئی۔ یہ سبھی لوگ مسلمان ہیں ۔ دو گھنٹے تک ٹرین کے اندر چلے اس ہنگامہ کے دوران پولیس کو ڈائل 100 پر فون بھی کیا گیا، لیکن کسی نے فون ریسیو نہیں کیا۔ خواتین ، بچوں اور بوڑھوں کو بری طرح پیٹنے کے بعد یہ شرپسند عناصر نقدی، جویلری اور موبائل فون لے کر فرار ہو گئے۔

پورے واقعہ کا ویڈیو وائرل ہونے کے بعد جی آر پی نے معاملہ میں ایف آئی آر درج کر کے تین مشتبہ افراد کو حراست میں لیا ہے۔ ایس پی جی آر پی ا و پی سنگھ کے مطابق کہ ویڈیو دیکھنے کے بعد ایف آئی آر درج کر لی گئی ہے ۔ اس سلسلہ میں خصوصی آپریشن ٹیم تین افراد کو حراست میں لے کر پوچھ گچھ کر رہی ہے۔

یوپی : مسلم کنبہ کے ارکان کے ساتھ ٹرین میں مار پیٹ ، نقدی اور زیورات بھی چھینے ، تین افراد حراست میں

قابل ذکر ہے کہ یہ معاملہ بدھ کی شام کو پیش آیا ۔ موٹا اور نبكاروري ریلوے اسٹیشن کے درمیان پانچ لوگوں کے ایک گروپ نے ایک معذور بچے سے اس کا موبائل چھین لیا، جب خاندان نے اس کی مخالفت کی تو لوگوں نے ان کے ساتھ مار پیٹ شروع کر دی۔ جب ٹرین نبكاروري اسٹیشن پہنچنے والی تھی ، تو شرپسند لوگوں نے چین کھینچ کر ٹرین روک دی اور فون کر کے اپنے ساتھیوں کو بلا لیا۔ موٹر سائیکل پر سوار تقریبا ایک درجن لوگ لاٹھی ڈنڈوں اور چھڑی کے لے کر پہنچ گئے۔ٹرین کا دروازہ بند ہونے پر ان لوگوں نے ایمرجنسی ونڈو کا شیشہ توڑ دیا اور اندر داخل ہوگئے اور اس کے بعد اس مسلم خاندان کی بے رحمی سے پٹائی کردی اور ان کے سامان لوٹ لئے ۔

ایف آئی آر درج کرانے والے محمد شاکر نے بتایا کہ اس حملے میں ان کی بیوی آسیہ ، بیٹی عرشی ، دو بیٹے فیضان اور ارسان، بھائی عارف، بھتیجہ آصف ، برادر نسبتی شاہد اور بہنیں شہناز اور ميناز شدید زخمی ہو گئے۔ ان میں سے چار کو فریکچر ہوا ہے، چار کے سر میں چوٹیں آئی ہیں، اور سب کے پیٹ میں اندرونی چوٹیں آئی ہیں۔تمام زخمیوں کا فرخ آباد کے رام منوہر لوہیا اسپتال میں علاج چل رہا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز