دہرہ دون کا واحد مسلم نیشنل جونیئر ہائی اسکول اتراکھنڈ میں بنا مثال

Sep 16, 2017 06:05 PM IST | Updated on: Sep 16, 2017 06:05 PM IST

دہرہ دون۔ دہرہ دون کا سب سے پرانا اور اکلوتا مسلم نیشنل اردو جونیئر ہائی اسکول اتراکھنڈ میں ایک مثال ثابت ہو رہا ہے ۔ رنگ برنگے کلاس روم ، شاندار فرنیچر، سی سی ٹی وی کیمروں کے ساتھ کمپیوٹر لیب والا یہ اردو اسکول سرکاری اسکولوں کو آئینہ دکھا رہا ہے ۔ اتراکھنڈ میں ایجوکیشن کی کوالٹی بھلے ہی بہتر ہو مگر سرکاری اسکولوں میں بچوں کی گھٹتی تعداد ہمیں یہ بتاتی ہے کہ دراصل حقیقت کیا ہے۔ وہیں دہرہ دون کا اکلوتا مسلم نیشنل جونیئر ہائی اسکول وقت کے ساتھ ساتھ اور بہتر ہوتا جا رہا ہے۔  توقع کی جانی چاہئے کہ مسلم سماج  اور سرکاری اسکولوں کے لئے ایک مثال ثابت ہوگا ۔

 دہرہ دون میں موجود مشہور انامللا بلڈنگ کے قریب بنے سب سے پرانے اور شہر کے اکلوتے اردو اسکول میں آکر لگتا ہے جیسے ہم کسی نامور اسکول کے کلاس روم میں آ گئے ہوں۔ خوبصورت کلاس میں ڈیزائنر فرنیچر پر صاف ستھرے  ڈریس پہنے بیٹھے یہ چھوٹے چھوٹے بچے مسلم  طبقہ سے تعلق رکھتے ہیں ۔ انگلش پڑھ رہے ان بچوں کے مستقبل کا اندازہ ان کے آغاز کو دیکھ کر لگایا جا سکتا ہے ۔ اس میں اسکول کا کمپیوٹر لیب بھی بچوں سے بھرا رہتا ہے ۔ کلاس روم سے نکل کر یہ اسٹوڈنٹس کمپیوٹر  کی تربیت لیتے ہیں ۔

دہرہ دون کا واحد مسلم نیشنل جونیئر ہائی اسکول اتراکھنڈ میں بنا مثال

اسکول میں اپنے بچوں کا ایڈمیشن کرانے والے ایک ایسے والدین سے ہم نے بات کی جو خود ایک زمانے میں اس اسکول کے طالب علم رہ چکے ہیں۔ اسکول کی پرنسپل بتاتی ہیں کہ آج جس طرح سے اسکولوں میں بچوں کے ساتھ طرح طرح کے واقعات سامنے آ رہے ہیں۔ اس کو ذہن میں رکھتے ہوئے مینجمنٹ نے اسکول میں سی سی ٹی وی اور دوسری بہت ساری سہولتیں مہیا کرائی ہیں ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز