بابری مسجد کیس : مسلم پرسنل لا بورڈ نے کپل سبل کی حمایت کی ، مولانا ولی رحمانی نے کہا : سماعت کیلئے یہ وقت صحیح نہیں 

Dec 06, 2017 11:55 PM IST | Updated on: Dec 06, 2017 11:55 PM IST

نئی دہلی : بابری مسجد -رام جنم بھومی کی سماعت 2019 تک موخر کرنے کی کپل سبل کی سپریم کورٹ سے اپیل کی مسلم پرسنل لا بورڈ نے حمایت کی ہے ۔ بورڈ کے جنرل سکریٹری مولانا ولی رحمانی کا کہنا ہے کہ کپل سبل نے مسلم فریقوں کی رائے کے بعد ہی معاملہ کی سماعت 2019 کے لوک سبھا انتخابات کے بعد کرانے کی بات کہی ہے۔

مولانا رحمانی کا کہنا ہے کہ یہ بات بالکل صحیح ہے کہ بابری مسجد -رام جنم بھومی کیس کی سماعت کا یہ وقت صحیح نہیں ہے ۔ ان کا کہنا ہے کہ اس معاملہ کی اگلی سماعت شروع ہوئی تو اس کا سیاسی فائدہ اٹھایا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ رام مندر معاملہ پر منگل کو سماعت ہوئی ، اس کے فورا بعد بی جے پی صدر امت شاہ نے سبل کے بیان پر رد عمل ظاہر کردیا ، اگر معاملہ کی ریگولر سماعت ہوئی تو کیا ہوگا ، اس کا اندازہ آسانی سے لگایا جاسکتا ہے۔

بابری مسجد کیس : مسلم پرسنل لا بورڈ نے کپل سبل کی حمایت کی ، مولانا ولی رحمانی نے کہا : سماعت کیلئے یہ وقت صحیح نہیں 

اس سوال کے جواب میں کہ اترپردیش سنی وقف بورڈ اجودھیا معاملہ کی جلد از جلد سماعت اور اس کا نپٹارہ چاہتا ہے ، مولانا رحمانی نے کہا کہ ان کی سنی وقف بورڈ سے اس بابت کوئی بات چیت نہیں ہوئی ہے۔ خیال رہے کہ سنی وقف بورڈ کے چیئرمین ظفر فاروقی نے بدھ کو کہا کہ بورڈ کا موقف ہے کہ معاملہ کی جلد از جلد سماعت ہو اور اس کا نپٹارہ کیا جائے ۔ مجھے یہ نہیں معلوم کے مسلم فریق کی طرف سے پیش ہوئے وکیل کپل سبل نے کس کے کہنے پر 2019 میں سماعت کی بات کہی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز