شرعی قانون میں مداخلت پر مسلم پرسنل لاء بورڈ کی سپریم کورٹ جانے کی دھمکی

Apr 24, 2017 03:34 PM IST | Updated on: Apr 24, 2017 03:34 PM IST

کانپور۔  آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ نے دھمکی دی ہے کہ اگر کوئی بھی فرد یا جماعت متنازعہ طلاق ثلاثہ کے بارےمیں شریعہ قانون میں مداخلت کرنے کی کوشش کرے گا تو وہ اس سلسلے میں سپریم کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹائے گا۔ ذرائع کے مطابق مسلم پرسنل لاء بورڈ نے عدالت عظمی میں طلاق ثلاثہ کے مسئلے کا دفاع کرنے کے لئے پہلے ہی بڑے وکیلوں کی ایک مضبوط ٹیم تشکیل دے دی ہے۔ سپریم کورٹ میں اس مسئلے کی سماعت آئندہ ماہ شروع ہونے والی ہے۔

مسلم پرسنل لاء بورڈ کے صدر مولانا رابع حسنی ندوی نے گزشتہ روز یہاں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بڑے وکلاء کی ایک ٹیم ترتیب دی گئی ہے، جو طلاق ثلاثہ کے خلاف کسی بھی اقدام کو چیلنج کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ "ہم شریعہ قانون میں مرکز ی یا ریاستی حکومت کو کسی مداخلت کی اجازت نہيں دیں گے اور اگر ایسا کچھ بھی ہوا ، تو ہم سپریم کورٹ سے رجوع کریں گے"۔

شرعی قانون میں مداخلت پر مسلم پرسنل لاء بورڈ کی سپریم کورٹ جانے کی دھمکی

مولانا رابع حسنی ندوی: فائل فوٹو

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز