یوپی میں مسلم دانشوروں نے بی جے پی حکومت سے اچھے کام کی امید کا کیا اظہار

Mar 16, 2017 10:52 PM IST | Updated on: Mar 16, 2017 10:52 PM IST

الہ آباد : اترپردیش میں بی جے پی کی غیر متوقع جیت کے بعد مسلم طبقہ نے محتاط رد عمل کا اظہار کیا ہے ۔ مسلم دانشوروں کے ایک طبقہ نے ریاست میں بی جے پی کی تشکیل پانے والی نئی حکومت سے امید ظاہر کی ہے کہ وہ عوام کی امیدوں پر کھری اتر کر دکھائے گی ۔ دانشوروں کا کہنا ہے کہ اقلیتوں سمیت سماج کے سبھی طبقات کو اعتماد میں لینے کی ضرورت ہے۔ مسلمانوں کا با شعور طبقہ ریاست کی نئی اور بدلی ہوئی سیاسی صورت حال پرا گرچہ ابھی کچھ کھل کر کچھ بھی کہنے کیلئے تیار نہیں ہے ، لیکن اس کو امید ہے کہ بی جے پی ریاست کے سماجی اور مذہبی تانے بانے کا خیال رکھتے ہوئے تمام فرقوں کے لوگوں کے مفاد کو سامنے رکھ کر کام کرے گی ۔

ادھر یو پی میں بی جے پی کے خیمے میں مسلسل جشن کا ماحول ہے ۔ یو پی الیکشن میں بی جے پی کو ملی غیر معمولی جیت سے پارٹی میں زبر دست جوش و خروش ہے ۔ لیکن یو پی میں بی جے پی کے لیے اب ایک امتحان کا بھی وقت ہے۔ آبادی کے اعتبارسے ملک کی سب سے بڑی ریاست میں بسنے والے تمام فرقوں اورطبقات کو ساتھ لے کر چلنا ہے ۔

یوپی میں مسلم دانشوروں نے بی جے پی حکومت سے اچھے کام کی امید کا کیا اظہار

جہاں مسلما نوں کا ایک با شعور طبقہ اب ایک مثبت سوچ کے ساتھ اس نئی تبدیلی کے ساتھ چلنے کی بات کہہ رہا ہے ۔ وہیں مسلمانوں کا ایک بڑا طبقہ ایسا بھی ہے جو بدلے ہوئے سیاسی منظر نامے پر اپنے تحفظات کا اظہار کر رہا ہے ۔ ممتاز قانون داں فرمان احمد نقوی کا خیال ہے کہ بی جی پی کو تمام فرقوں کا اعتماد حاصل کرنے کے لیے عملی طور کچھ ٹھوس کام کرنے ہوں گے۔ ان کا کہنا ہے کہ وزیر اعظم مودی نے اپنے انتخابی جلسوں میں عوام سے جو وعدے کیے تھے ، ان کو پورا کرکے دکھانا ہوگا ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز