کانگریس پر دہشت گرد حامی ہونے کا دھبہ انتہائی سنگین ہے: مختار عباس نقوی

Oct 28, 2017 09:16 PM IST | Updated on: Oct 28, 2017 09:16 PM IST

نئی دہلی۔ بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے کانگریس کو چیلنج کیا ہے کہ وہ گجرات کے بھروچ میں اسلامک اسٹیٹ سے منسلک مبینہ دہشت گرد کے اس کے سینئر کانگریس لیڈر احمد پٹیل سے تعلقات کے بارے میں اٹھنے والے سوالوں پر پوزیشن واضح کرے۔ گجرات پولیس کے انسداد دہشت گردی دستہ نے بھروچ ضلع کے اكلیشور واقع سردار پٹیل ہسپتال میں کام کر چکے مشتبہ آئی ایس دہشت گرد کو دو دن پہلے گرفتار کیا ہے۔

بی جے پی کے سینئر لیڈر اور مرکزی وزیر مختار عباس نقوی نے یہاں ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ میڈیا کی رپورٹ کے مطابق جس ہسپتال میں یہ دہشت گرد کام کرتا رہا، اس ہسپتال کا تعلق مسٹر احمد پٹیل سے ہے۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس پر اب تک بدعنوانی کا دھبہ لگتا تھا ، لیکن دہشت گرد حامی ہونے کا دھبہ اس سے بھی کہیں سنگین ہے۔ کانگریس کوئی بھی کارروائی کے بجائے بی جے پی پر معاملے پر سیاست کرنے کا الزام لگا دیتی ہے اور اس مسئلے پر لیپا پوتی کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔

کانگریس پر دہشت گرد حامی ہونے کا دھبہ انتہائی سنگین ہے: مختار عباس نقوی

بی جے پی کے سینئر لیڈر اور مرکزی وزیر مختار عباس نقوی

انہوں نے کہا کہ مسٹر پٹیل کانگریس صدر سونیا گاندھی کے سیاسی مشیر ہیں لہذا محترمہ گاندھی اور کانگریس کے نائب صدر راہل گاندھی کو اس معاملے پر وضاحت کرنی چاہئے اور بتانا چاہئے کہ ان کی سوچ کیا ہے۔ مسٹر نقوی نے کہا کہ بی جے پی اس معاملے پر کوئی سیاست نہیں کر رہی ہے۔ یہ ملک کی سلامتی سے متعلق معاملہ ہے اور لوگوں کی زندگی کا سوال ہے۔ بی جے پی کی قیادت والی حکومت کی پالیسی واضح ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز