نسیم الدین صدیقی کا بی ایس پی سپریمو پر جوابی حملہ ، کہا : مجھے مایاوتی نے ہی فون ٹیپ کی ٹریننگ دی

May 12, 2017 07:35 PM IST | Updated on: May 12, 2017 07:36 PM IST

لکھنؤ: اترپردیش میں یوگی حکومت میں وزیر سواتی سنگھ کی بیٹی اور ساس کے بارے میں نازیبا تبصرہ کرنے کے ملزم اور بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) کے سابق سکریٹری جنرل نسیم الدین صدیقی نے صفائی دی کہ بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) لیڈر کے خلاف دھرنا مظاہرہ پارٹی سربراہ مایاوتی کے حکم پر کیا گیا تھا۔

دو روز پہلے بی ایس پی سے نکالے گئے مسٹر صدیقی نے کل پارٹی سربراہ مایاوتی کے خلاف محاذ کھولتے ہوئے سنگین الزام لگائے تھے۔ آج راجدھانی لکھنؤ کے حضرت گنج تھانے میں سواتی سنگھ معاملے میں بیان درج کرنے آئے مسٹر صدیقی نے صحافیوں سے کہا کہ مہارانی (مایاوتی) کے حکم پر دھرنا مظاہرہ ہوا تھا ۔صدیقی نے کہا کہ کانشی رام کے بعد سے نہ جانے کتنے سینئر لیڈروں کو مایاوتی نے اتنا پریشان کیا کہ یا تو وہ خود چھوڑ گئے یا پھر انہیں نکال دیا گیا۔ فون ٹیپ کی ٹریننگ بھی انہوں نے ہی مجھے دی۔ جب مجھے اپنے اور اپنے خاندان پر خطرہ منڈلاتا نظر آنے لگا ، تو میں نے بھی فون ٹیپ شروع کردیا ۔ میں نے خاندان کو بچانے کے لئے یہ کیا۔

نسیم الدین صدیقی کا بی ایس پی سپریمو پر جوابی حملہ ، کہا : مجھے مایاوتی نے ہی فون ٹیپ کی ٹریننگ دی

انہوں نے کہا کہ 'مایاوتی کی جانب سے سکھائی گئی فون ٹیپ کو جب مایاوتی پر ہی کیا استعمال، تو مایاوتی تلملا اٹھی ۔ مایاوتی جیسا بلیک میلر تو کوئی ہے ہی نہیں۔ صدیقی نے کہا کہ 'اپنے آپ کو بچانے کے لئے ہمیشہ نئی نئی کہانی ایجاد کرتی ہیں۔ کہہ رہی ہیں ٹیپ میں چھیڑ چھاڑ کی گئی ہے، کوئی چھیڑ چھاڑ نہیں کی گئی، اگر ان کو پتہ تھا کہ میں ٹیپ بلیک میلر تھا ، تو نکالنے کا الزام تو صحیح لگاتیں۔

اس سے پہلے مسٹر صدیقی نے سواتی سنگھ کے مقدمے میں بیان درج کرایا۔ نسیم الدین کا بیان حضرت گنج کوتوالی انچارج نے ویڈیو ریکارڈنگ کے طور پر درج کیا۔ غور طلب ہے کہ سواتی سنگھ کے شوہر اور بی جے پی کے نائب صدر دياشنكر سنگھ نے گزشتہ سال جولائی میں مئو میں ایک پروگرام میں بی ایس پی کی سربراہ مایاوتی کے خلاف نازیبا تبصرہ کیا تھا۔ اس سلسلے میں ان کی خاصی تنقید ہوئی تھی۔ جواب میں بی ایس پی کارکنوں نے لکھنؤ میں مظاہرے کے دوران بینرز پر دياشنكر، ان کی ماں، بہن اور بیٹی کے بارے میں قابل اعتراض باتیں لکھی تھیں۔

اس سلسلے میں سواتی سنگھ نے بی ایس پی کی صدر مایاوتی اور اس وقت کے سکریٹری جنرل نسیم الدین سمیت دیگر رہنماؤں کے خلاف حضرت گنج تھانے میں ایف آئی آر درج کرائی تھی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز