نسیم الدین صدیقی نے سماجوادی پارٹی میں شمولیت کی قیاس آرائیوں کو کیا مسترد

Sep 16, 2017 01:46 PM IST | Updated on: Sep 16, 2017 01:46 PM IST

لکھنئو۔ بہوجن سماج پارٹی کے قدآور لیڈر رہے نسیم الدین صدیقی نے سماجوادی پارٹی میں شامل ہونے کی قیاس آرائیوں کو سرے سے مسترد کر دیا ہے۔ نیوز 18 ہندی سے خاص بات چیت میں انہوں نے بتایا کہ وہ کبھی بھی ایس پی کا دامن نہیں تھامیں گے۔ صدیقی نے بتایا کہ مجھے ہی نہیں معلوم کہ میں 5 اکتوبر کو ہزاروں حامیوں کے ساتھ سماج وادی پارٹی کے آگرہ میں ہونے والے ریاستی سطح کے اجلاس میں ایس پی میں شامل ہونے جا رہا ہوں۔ ابھی فی الحال ہم اپنے کارکنوں اور حامیوں سے صلاح ومشورہ کریں گے۔ ابھی کوئی فیصلہ نہیں لیا گیا ہے۔ کیونکہ لوک سبھا انتخابات کے لئے اب بھی وقت ہے۔

نسیم الدین صدیقی کہتے ہیں کہ جب میں سی ایم یوگی آدتیہ ناتھ سے سیکورٹی کا مطالبہ کرنے گیا تو لوگوں نے کہہ دیا کہ نسیم الدین بی جے پی کا دامن تھام رہے ہیں۔ جب ہم کانگریس کے لوگوں کے ساتھ بیٹھ گئے تو سمجھ لیا گیا کہ کانگریس میں شامل ہونے کی تیاری ہے۔ ایسے میں ہماری بات چیت تمام جماعتوں کے رہنماؤں کے ساتھ ہوتی رہتی ہے۔

نسیم الدین صدیقی نے سماجوادی پارٹی میں شمولیت کی قیاس آرائیوں کو کیا مسترد

نسیم الدین صدیقی کی فائل فوٹو۔

غور طلب ہے کہ مئی میں بہوجن سماج پارٹی نے قدآور لیڈر اور سب سے بڑے مسلم چہرے نسیم الدین صدیقی کو پارٹی سے نکال دیا تھا۔ بی ایس پی نے صدیقی پر پارٹی کی شبیہ خراب کرنے کا الزام لگایا تھا۔ بی ایس پی نے دعوی کیا تھا کہ نسیم الدین صدیقی نے مغربی یوپی میں بے نامی املاک اور ذبیحہ خانے قائم کئے ہیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز