قومی کونسل کے لیگل پینل کا فیصلہ ، اردو لیگل ٹرمنالوجی سکھانے کیلئے شروع کیا جائے گا کورس

Mar 22, 2017 10:31 PM IST | Updated on: Mar 22, 2017 10:31 PM IST

دہلی : قومی کونسل برائے فروغ اردو زبان جلد ہی قانونی اصطلاحات سکھانے کے لیے نیا کورس شروع کرے گی ۔ کونسل کے لیگل پینل نے پندرہ سے بیس دنوں پرمبنی کورس شروع کرنے کی سفارش کی ہے ۔ تاکہ قانونی زبان میں وکلااور عدالتی اسٹاف کو اردو زبان کی قانونی اصطلاحات سے واقف کرایا جا سکے۔

قومی کونسل کے دفتر میں کونسل کے لیگل پینل کے اراکین میٹنگ کے ایجنڈے پرتبادلہ خیال کیا ۔ میٹنگ میں قانونی کتابوں کی ا شاعت اور نئی کتابوں اور پروجیکٹ شرو ع کرنے پر بھی تبادلہ خیال ہوا ۔ میٹنگ کے دوران قانونی مواد پر مبنی کئی کتابوں کو ہری جھنڈی دکھائی گئی۔ علاوہ ازیں آئندہ ماہ اردو کی دستوری و ا ٓئینی حیثیت پر ہونے والے سمینار پر بھی مہر لگائی گئی ۔تاہم میٹنگ کے دورا ن تجویز آئی کہ قومی کونسل وکلا اور عدالتی اسٹاف کو اردو لیگل ٹرمنالوجی سکھانے پر کام کرے ، جس کے بعد ریفریشر کورس شروع کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔

قومی کونسل کے لیگل پینل کا فیصلہ ، اردو لیگل ٹرمنالوجی سکھانے کیلئے شروع کیا جائے گا کورس

میٹنگ کی دوسری اہم تجویز کشمیر سے متعلق پیش کی گئی ۔ میٹنگ میں اس بات پر بھی بحث کی گئی کہ کشمیر میں نئے آئی اے ایس او رآئی پی ایس افسران اورنچلی عدالتوں کے عملہ اردو سے ناواقف ہیں ، جس کی وجہ انھیں ہر سطح پر مترجم یا ریڈ ر کی مدد لینی پڑتی ہے ۔ اس سے نہ صرف اردو کا نقصان ہورہا ہے ، بلکہ انتظامی امور میں بھی دقت پیدا ہو رہی ہے ۔ ماہرین نے سفارش کی کہ ریاست جموں وکشمیر میں بیرون ریاست سے آئے افسران کو اردو سکھانے کے لیے ریاستی حکومت کو خط لکھا جائے ۔ ساتھ ہی مرکزی حکومت کو بھی اس بابت بیدار کیا جائے ۔

میٹنگ کے دوران ماہرین نے بتایا کہ کئی ریاستوں میں اردو لیگل ٹرمنالوجی کے ہونے کی وجہ سے مقابلہ جاتی امتحانات میں اردو شامل ہے، جس میں ریاست ہریانہ ایک مثال ہے۔ اردو لیگل ٹرمنالوجی نہ جاننے کی وجہ سے وکلا اور عدالتی افسران و اسٹاف کو کافی دقت پیش آتی ہے ۔ ماہرین نے کہا کہ کونسل اگر اس میدان میں کام کرتی ہے ، تو اس کے بہتر اور مثبت نتائج برآمد ہوں گے ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز