دہشت گردی کے الزمات سے باعزت بری محمد عامر کیلئے انسانی حقوق کمیشن نے معاوضہ کا کیا مطالبہ

Jan 12, 2017 10:00 PM IST | Updated on: Jan 12, 2017 10:00 PM IST

نئی دہلی: زندگی کا ایک بڑا حصہ جیل کی سلاخوں کے پیچھے گنوا چکے محمد عامر کیلئے قومی انسانی حقوق کمیشن نے دہلی حکومت سے معاوضہ کا مطالبہ کیا ہے۔ انسانی حقوق کمیشن نے وجہ بتاو نوٹس جاری کرکے دہلی حکومت سے پوچھا ہے کہ دہشت گردی کے الزاموں سے باعزت بری ہوئے محمد عامر کو معاوضہ کیوں نہیں دیا جائے؟۔

دہلی حکومت کو جاری نوٹس میں قومی انسانی حقوق کمیشن نے کہا ہے کہ حکومت کی ذمہ داری ہے کہ تمام شہریوں کی حقوق کی حفاظت کرے، ایسے میں جب عامر کی پوری زندگی دہشت گردی کے غلط الزامات کی وجہ سے پٹری سے اتر گئی ہے، تو حکومت کا فرض بنتا ہے کہ وہ ان کی مدد کے لئے آگے آئے۔ نوٹس میں حکومت سے عامر کیلئے 5 لاکھ روپے کے معاوضہ کا مطالبہ کیا گیا ہے۔ دہلی حکومت کو اس نوٹس کا جواب دینے کے لئے 6 ہفتے کا وقت دیا گیا ہے۔

دہشت گردی کے الزمات سے باعزت بری محمد عامر کیلئے انسانی حقوق کمیشن نے معاوضہ کا کیا مطالبہ

قابل ذکر ہے کہ سسٹم کی غلطی کی وجہ سے عامر کو 14 سال جیل کی سلاخوں کے پیچھے زندگی گزارنی پڑی تھی ۔ 20 فروری 1998 کو دہلی پولیس نے اغوا کر لیا تھا۔ اس وقت عامر کی عمر 18 سال تھی۔ دہلی پولیس نے عامر کو دہلی این سی آر میں 1996-97 میں ہوئے بم دھماکوں کا ملزم بنا دیا ۔

عامر کو 14 سالوں تکجیل میں رہتے ہوئے خود کو بے گناہ ثابت کرنے کیلئے عدالتی جنگ لڑنی پڑی اور بالآخر عامر کو 2012 میں تمام الزامات سے باعزت بری کردیا گیا اور جیل سے اس کو رہائی نصیب ہوئی ۔ عامر نے انصاف حاصل کرنے کی اپنی جنگ میں والد کو بھی کھو دیا اور کیریئر بنانے کی عمر جیل میں گنوا دی۔

ہندی سیاست ڈاٹ کام کے مطابق عامر نے انسانی حقوق کمیشن کے اس اقدام کا شکریہ ادا کیا ہے ۔ عامر کا کہنا ہے کہ رقم خواہ کتنی بھی بڑی ہو، 14 سال کا وقت لوٹانے کی طاقت نہیں رکھتی ہے، میں چاہوں گا کہ دہلی حکومت مجھے پیسے دینے کی بجائے میری عزت نفس کا خیال رکھتے ہوئے سرکاری نوکری دے، جو گزر گیا سو گزر گیا ، اس وقت کو تلاش کرنے میں پیچھے نہیں جا سکتا، اب مجھے آگے ہی بڑھنا ہے اور زندگی خود اعتمادی کے ساتھ بھی جینی ہے۔

عامر کا کہنا ہے کہ یہ کیسا المیہ ہے خود سے سرینڈر کرنے والے دہشت گردوں کو حکومت کا بازآبادکاری سینٹر مہیا کراتی ہے ، لیکن ان کے لئے کچھ نہیں کرتی ، جو نظام کی غلطیوں کی وجہ سے دہشت گرد ثابت ہوتے ہیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز