اردو کسی مذہب کی زبان نہیں ملک کی زبان : پرکاش جاؤڈیکر

Mar 19, 2017 08:02 PM IST | Updated on: Mar 19, 2017 08:02 PM IST

نئی دہلی: مرکزی وزیر برائے فروغ انسانی وسائل پرکاش جاؤڈیکر نے اردو کے فروغ اور تحفظ پر زور دیتے ہوئے کہا کہ اردو کسی خاص مذہب یا علاقے کی نہیں بلکہ یہ سب کی زبان ہے۔

قومی اردو کونسل برائے فروغ اردو زبان (این سی پی یو ایل) کے زیر اہتمام یہاں منعقدہ سہ روزہ عالمی اردو کانفرنس کے آخری دن سامعین کو خطاب کرتے ہوئے مسٹر جاؤڈیکر نے کہا کہ تمام مادری اور علاقائی زبانوں کی اپنی شناخت اور الگ اہمیت و افادیت ہے اس لیے مرکز کی مودی حکومت تمام زبانوں کے فروغ اور ترویج و اشاعت کے لئے پابند عہد ہے۔

اردو کسی مذہب کی زبان نہیں ملک کی زبان : پرکاش جاؤڈیکر

pic : ncpul face book

انہوں نے کہا کہ ملک کی مختلف مادری اور علاقائی زبان، مختلف مذاہب، الگ الگ رہن سہن کے باوجود کثرت میں وحدت کو صحیح ثابت کرتے ہوئے پورے ملک کا متحد ہونا ہی ہندوستان کی شناخت ہے، جس پر ملک کو ناز ہے۔ یہی وجہ ہے کہ حکومت ہند تمام زبانوں کے فروغ کے لئے ہر ممکن مدد فراہم کرتی ہے۔ تاکہ اس شناخت کو زندہ اور گنگا جمنی تہذیب کو برقرار رکھا جاسکے۔

مسٹر جاؤڈیکر نے اردو کے فروغ کے لیے اردو کونسل کی کارکردگی اور کوششوں کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ اردو کے فروغ کے لیے کونسل کو اپنے کام کاج میں مزید توسیع کرنی چاہیے اور بچوں کو اردو پڑھنے کے لئے بھی راغب کرنا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ سچر کمیٹی کی سفارشات کے بعد تعلیمی میدان میں مسلمانوں کی حالت میں خاطر خواہ بہتری آئی ہے اور لوگ تعلیم کے معاملے میں اب کافی بیدار ہوچکے ہیں اور مسلمانوں کی تعلیمی ترقی کے لئے مودی حکومت بھی خاطر خواہ اقدامات کر رہی ہے۔

تعلیم کا معیار بہتر کرنے پر زور دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ حکومت نے سرکاری اسکولوں کا معیار اس قدر بہتر کرنے کا عہد کیا ہے کہ لوگ اپنے بچوں کو سرکاری اسکولوں میں پڑھانے کو ترجیح دینے لگیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز