این جی ٹی کے اس نئے حکم سے دہلی این سی آر میں ہو سکتی ہے پٹرول اور ڈیزل کی قلت

Mar 31, 2017 11:48 AM IST | Updated on: Mar 31, 2017 11:48 AM IST

نئی دہلی : نیشنل گرین ٹربیونل نے پبلک سیکٹر کی تیل کمپنیوں کو ہدایت دی ہے کہ وہ سالوں پرانے تیل ٹینکروں کو دہلی این سی آر میں نہ بھیجیں۔ اس کے تحت اب یہ آئل ٹینکر دہلی اور اس سے متصل ہریانہ، اتر پردیش اور راجستھان کے اضلاع میں نہیں جا سکیں گے۔ ایسے میں اگلے چند دنوں میں دہلی قومی راجدھانی خطہ میں تیل کا بحران پیدا ہو سکتا ہے۔خیال رہے کہ دہلی این سی آر میں سینکڑوں گریڈ -1 اور گریڈ -2 آئل ٹینکر چلتے ہیں۔ صرف انڈین آئل کارپوریشن کو اپنے 621 آئل ٹینکر ہٹانے پڑیں گے۔ تمام تیل کمپنیوں کو این جی ٹی کا حکم ماننے کیلئے کہا گیا ہے۔

این جی ٹی کے چیئرپرسن جسٹس سوتنتر کمار نے انڈین آئل کارپوریشن، بھارت پٹرولیم کارپوریشن اور ہندوستان پٹرولیم کو فوری طور ایسی گاڑیوں کا استعمال بند کرنے کی ہدایت دی ہے۔ گرین اتھارٹی نے جوائنٹ پولیس کمشنر کو اس بات کو یقینی بنانے کی ہدایت دی ہے کہ اس کے حکم کی تعمیل ہو ۔

این جی ٹی کے اس نئے حکم سے دہلی این سی آر میں ہو سکتی ہے پٹرول اور ڈیزل کی قلت

این جی ٹی نے گزشتہ سال دسمبر میں تمام پٹرولیم کمپنیوں کو نوٹس جاری کر کے یہ بتانے کیلئے کہا تھا کہ کیا وہ پٹرول پمپوں پر پٹرول اور ڈیزل کی فراہمی کے لئے کسی قسم کی ایک دہائی سے زیادہ پرانی ڈیزل گاڑیوں کا استعمال کرتی ہیں۔نیشنل گرین ٹربیونل نے دہلی این سی آر علاقوں میں گریڈ -1 اور گریڈ -2 ٹرکوں کے آنے جانے پر پابندی لگا دی ہے۔ اس پابندی سے ان تیل ٹینکروں کی انٹری بھی رک جائے گی، جو دہلی این سی آر کے پٹرول پمپوں پر ایندھن کی سپلائی کرتےہیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز