این آئی اے کی دہلی اور سری نگر میں 27 مقامات پر چھاپے کی کارروائی، 2.20 کروڑ روپئے ضبط

Sep 06, 2017 09:57 PM IST | Updated on: Sep 06, 2017 09:57 PM IST

نئی دہلی / سری نگر۔  قومی تفتیشی ایجنسی (این آئی اے) نے جموں و کشمیر میں دہشت گردانہ سرگرمیوں کے لئے سرحد پار سے ہو رہی فنڈنگ ​​کے سلسلے میں حوالہ کاروباریوں کے ٹھکانوں پر آج دارالحکومت دہلی اور سری نگر میں 27 مقامات پر چھاپے مارے اور تقریباً 2.20 کروڑ روپئے ضبط کئے۔ این آئی اے کے مطابق صبح سے شروع کی گئی اس مہم کے دوران دہلی اور سری نگر میں ان کاروباریوں کے گھروں اور تجارتی اداروں کی تلاشی لی گئی جن پر دہشت گردانہ سرگرمیوں کیلئے فنڈنگ کرنے کا الزام یا شک ہے۔

چھاپہ کی کارروائی کے دوران ان مقامات سے تقریباً 2.20 کروڑ کی رقم کے ساتھ ہی حوالہ کاروبار سے متعلق قابل اعتراض دستاویزات اور کئی لیپ ٹاپ، موبائل فون اور ہارڈ ڈسک جیسے الیکٹرانک سامان بھی برآمد کئے گئے۔

این آئی اے کی دہلی اور سری نگر میں 27 مقامات پر چھاپے کی کارروائی، 2.20 کروڑ روپئے ضبط

این آئی اے نے اس سلسلے میں کل سرینگر سے پتھراؤ کے اقعہ میں شامل دو لوگوں کلگام کے جاوید احمد بھٹ اور پلوامہ سے کامران یوسف کو گرفتار کیا تھا۔

این آئی اے کے مطابق اس دوران کئی ایسی ڈائریاں، لیزر بُک بھی برآمد ہوئےہیں جن میں حوالہ کاروبار سے وابستہ کئی لوگوں کے پتے، غیرقانونی طریقے سے سرحد پار کاروبار کرنے والی کمپنیوں کے بینک کھاتوں اور جموں کشمیر سے وابستہ کچھ بینک کھاتوں کے پاس بک بھی ہیں۔ متحدہ عرب امارات کا دورہ کرنے والے کچھ لوگوں کے دورہ کے دستاویزات بھی چھاپہ کے دوران برآمد کئے گئے ہیں۔ چھاپی کی کارروائی شام گئے تک جاری تھی۔ اس معاملے میں مشتبہ لوگوں سے ان کے ٹھکانوں سے ملے قابل اعتراض دستاویزات کےبارے میں پوچھ گچھ کی جا رہی ہے۔ این آئی اے نے اس سلسلے میں کل سرینگر سے پتھراؤ کے اقعہ میں شامل دو لوگوں کلگام کے جاوید احمد بھٹ اور پلوامہ سے کامران یوسف کو گرفتار کیا تھا۔ اس کے علاوہ جانچ ایجنسی نے کشمیر بار ایسوسی ایشن کے صدر ایڈووکیٹ میاں عبدالقیوم کو آج اپنے دہلی ہیڈ کوارٹر میں طلب کیا ہے۔

ایجنسی نے پتھراؤ کے واقعہ کے خلاف مہم چلانے سے پہلے پتھراؤکرنے والے گروہوں کی مکمل فہرست تیار کی ہے۔ ذرائع کے مطابق اس فہرست میں پتھراؤ کرنے والے 100 سے زائد لوگوں کے نام ہیں۔ ایجنسی نے پاکستان مقبوضہ کشمیر (پی او کے ) سے دہشت گردانہ سرگرمیوں کے لئے فنڈنگ ​​ کے سلسلے میں حریت کانفرنس کے دونوں گروپوں کے ترجمان ایاز اکبر اور ایڈووکیٹ شاهد الاسلام سمیت سخت گیر حریت کانفرنس کے چیئرمین سید علی شاہ گیلانی کے داماد اور کئی علیحدگی پسند لیڈروں کو گرفتار کیا ہے۔ اس میں دیگر تنظیم کے لوگوں کو بھی گرفتار کیا گیا ہے جن میں نعیم خان، معراج الدين كلوال، پیر سیف اللہ اور فاروق احمد ڈار عرف بٹا كراتايت اور تاجر ظہوروتالي وغیرہ شامل ہیں۔

واضح رہے کہ برہان وانی کی گذشتہ جولائی میں تصادم میں ہلاکت کے بعد سے وادی میں سیکورٹی فورسز پر پتھراؤ کا سلسلہ شروع ہوا تھا۔ پتھر بازی کا دور گزشتہ سال سے رک رک کر جاری ہے اگرچہ پچھلے کچھ عرصے سے ان واقعات میں کمی آئی ہے۔ رپورٹوں میں کہا گیا ہے کہ پتھربازوں کے گروہ پتھر پھینکنے کے لئے نوجوانوں کو اچھا خاصہ پیسہ دیتے ہیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز