ٹیم انڈیا کے نئے ہیڈ کوچ پرفیصلہ ابھی نہیں: بی سی سی آئی کی وضاحت

Jul 11, 2017 05:15 PM IST | Updated on: Jul 11, 2017 07:30 PM IST

نئی دہلی۔  ہندوستانی کرکٹ کنٹرول بورڈ (بی سی سی آئی) کی متزلزل پوزیشن کی طرح ٹیم انڈیا کے کوچ کے بارے میں بھی هائي وولٹیج ڈرامے میں اسرار بنا ہوا ہے۔ کچھ گھنٹوں میں ہی کوچ کو لے کر خبروں کا بازار بدل گیا۔پہلے خبر آئی کہ روی شاستری کو ٹیم انڈیا کا نیا کوچ بنا دیا گیا ہے لیکن اس کے چند گھنٹے بعد ہی بی سی سی آئی کے سیکرٹری امیتابھ چودھری نے اس کی تردید کر دی ۔ ٹیم انڈیا کے نئے کوچ کو لے کر منگل کو میڈیا میں خبروں کا بازار گرم رہا۔ پہلے شاستری کے کوچ بننے کی خبر آئی لیکن کچھ دیر بعد ہی بی سی سی آئی کے سیکرٹری چودھری نے اس کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ سچن تندولکر، سورو گنگولی اور وی وی ایس لکشمن کی تین رکنی کمیٹی کو اب کوچ کا فیصلہ کرنا ہے۔انہوں نے میڈیا میں شاستری کے کوچ بننے کی خبروں کو یکسر خارج کر دیا۔

منگل کا دن بی سی سی آئی کے لئے دو طرح سے سنسنی خیز رہا۔ایک طرف لوڈھا کمیٹی کی سفارشات کو لے کر اپنے خصوصی عام اجلاس (ایس جي ایم) کو ملتوی کر دیا گیا اور دوسری طرف کوچ کے معاملے پر بی سی سی آئی کو وضاحت دینا پڑی۔ دراصل بی سی سی آئی کے انتظام و انصرام کرنے والی منتظمین کی کمیٹی کے چیئرمین ونود رائے نے پیر کی رات کو کہا تھا کہ کرکٹ ایڈوائزری کمیٹی (سی اے سی ) کو منگل کی شام تک کوچ کا فیصلہ کر لینا ہے۔اسی درمیان میڈیا میں خبر آئی کہ شاستری کو کوچ بنا دیا گیا ہے۔اس کے بعد تو یہ خبر میڈیا میں جنگل کی آگ کی طرح پھیل گئی اور سب جگہ یہ بات آ گئی کہ شاستری کوچ بن گئے ہیں اور ان کا دور اقتدار 2019 کے ون ڈے ورلڈ کپ تک کے لئے ہو گا۔

ٹیم انڈیا کے نئے ہیڈ کوچ پرفیصلہ ابھی نہیں: بی سی سی آئی کی وضاحت

روی شاستری، وراٹ کوہلی: گیٹی امیجیز

سورو گنگولی، سچن تندولکر اور وی وی ایس لکشمن کی تین رکنی کرکٹ ایڈوائزری کمیٹی (سی اے سی ) نے کل ممبئی میں میراتھن اسٹائل میں پانچ امیدواروں کے انٹرویو لینے کے بعد کہا تھا کہ کپتان وراٹ کے امریکہ سے واپس لوٹنے کے بعد ان سے بات چیت کر کےکوچ کا اعلان کیا جائے گا۔ سی اے سی کے اس اعلان کے بعد منتظمین کی کمیٹی کے چیئرمین ونود رائے نے سی اے سی کو ہدایت دی کہ وہ وراٹ سے بات چیت کریں اور منگل کی شام تک کوچ کا اعلان کر دیں۔سی اے سی نے پانچ امیدواروں شاستری، وریندر سہواگ، ٹام موڈی، رچرڈ پائی بس اور لال چند راجپوت کے انٹرویو کیے تھے۔لینڈل شمون اس عمل کے لئے دستیاب نہیں ہو سکے تھے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز