سب کا ساتھ، سب کا وکاس؟ اتراکھنڈ حکومت کی 100 دن کی حصولیابیوں میں اقلیتوں کا تذکرہ نہیں

Jul 06, 2017 12:47 PM IST | Updated on: Jul 06, 2017 12:47 PM IST

دہرادون۔ اتراکھنڈ میں بی جے پی حکومت اپنے 100 دن کے کام کاج کا ریکارڈ عوام کے سامنے رکھ چکی ہے۔ اس دوران اس نے جو کام کئے اس پر ایک کتابچہ بھی جاری کیا ہے مگر اس کتابچہ میں ان 100 دنوں میں اقلیتوں کے لئے کچھ بھی نظر نہیں آیا ہے۔ ریاست کی ترویندر سنگھ راوت حکومت کے 100 دنوں کے کام کاج کو دکھانے والی کتابچہ میں ہر اس اسکیم اور میٹنگ کا ذکر کیا گیا ہے جو گزشتہ 100 دنوں میں حکومت کے وزراء اور محکموں نے کئے۔ مگر بہت ڈھونڈنے پر بھی اس کتابچہ کے کسی صفحے میں اقلیتوں سے منسلک اسکیموں کا ذکر تک نظر نہیں آیا۔

سب کا ساتھ سب کا وکاس کے نعرے لگانے کا دعوی کرنے والے بی جے پی کے ریاستی لیڈر اجے بھٹ سے جب اس بارے میں بات کی گئی تو انہوں نے بڑی ہی صاف گوئی سے جواب دیا۔ اجے بھٹ کا کہنا ہے کہ کتابچہ میں انہی باتوں کا ذکر کیا گیا ہے جو حقیقت میں گزرے سو دنوں میں ہوا ہے۔

سب کا ساتھ، سب کا وکاس؟ اتراکھنڈ حکومت کی 100 دن کی حصولیابیوں میں اقلیتوں کا تذکرہ نہیں

حکومت میں اقلیتی محکمہ کے ڈائریکٹر کی ذمہ داری سنبھال چکے احمد علی سے جب ہم نے صوبے میں اقلیتی معاشرے کے موجودہ حالات کے بارے میں بات کی تو انہوں نے کہا کہ حکومت اسکیمیں تو بنا دیتی ہے لیکن بجٹ کی کمی اور اصل مسائل پر توجہ نہ دینا ایک بڑی دشواری ہے۔ جانکار مانتے ہیں کہ اگر صوبے میں اقلیتوں کے حالات میں بہتری لانا ہے تو اسکیموں کے اعلان کے ساتھ ہی ان اسکیموں پر سنجیدگی بھی دکھانی ہوگی۔ کسی بھی حکومت کی سمت کو سمجھنے کے لئے پہلے سو دن ہی کافی نہیں ہوتے لہذا توقع کی جانی چاہئے کہ آنے والے چند دنوں میں حکومت اقلیتوں کے لئے بڑے اور موثر فیصلے لیتی نظر آئے گی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز