اپہار سنیما آتش زدگی واقعہ کے مجرم گوپال انسل کو نہیں ملی راحت ، جانا ہو گا جیل

Mar 20, 2017 01:54 PM IST | Updated on: Mar 20, 2017 01:54 PM IST

نئی دہلی۔ سپریم کورٹ نے اپہار سنیما آتش زدگی واقعہ کے مجرم گوپال انسل کو راحت دینے سے انکار کر دیا ہے۔ اب گوپال انسل کو اپہار آتشزدگی کی صورت میں ایک سال قید کی سزا بھگتنے کے لئے آج ہی خود سپردگی کرنا ہوگا۔ انسل نے صدر کے سامنے رحم کی درخواست دائر کرنے کے پیش نظر خود سپردگی کے لئے کچھ مہلت دیے جانے کی درخواست کی لیکن سپریم کورٹ اپنے فیصلے پر قائم رہا۔

واضح رہے کہ 9 فروری کو سپریم کورٹ نے 1997 میں ہوئے اپہار آتشزدگی کیس کے سلسلے میں ریئل اسٹیٹ کے گوپال انسل کو ایک سال قید کی سزا سنائی۔ جبکہ اسی کیس میں ان کے بڑے بھائی سشیل انسل پر ان کی عمر کو دیکھتے ہوئے عدالت نے رحم کیا ہے۔ اس واقعہ میں 59 افراد ہلاک ہو گئے تھے۔ جانچ ایجنسی اور اپہار آتشزدگی سے متاثر سنگھ نے سپریم کورٹ کے 19 اگست 2015 کے فیصلے پر نظر ثانی کی درخواست دائر کی تھی۔ اس فیصلے میں کہا گیا تھا کہ جرمانے کے طور پر 30-30 کروڑ روپے نہیں دینے پر سشیل انسل اور گوپال انسل کو دو سال سخت قید کی سزا بھگتنی ہوگی۔ مجرم پہلے ہی جرمانہ بھر چکے ہیں۔

اپہار سنیما آتش زدگی واقعہ کے مجرم گوپال انسل کو نہیں ملی راحت ، جانا ہو گا جیل

واضح رہے کہ جنوبی دہلی کے گرین پارک علاقے میں اپہار تھیٹر میں 13 جون 1997 کو 'بارڈر' فلم دکھائے جانے کے دوران آگ لگنے کے بعد دم گھٹنے سے 59 لوگوں کی موت ہو گئی تھی۔ اس کے بعد مچی بھگدڑ میں 100 سے زائد افراد زخمی بھی ہو گئے تھے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز