یوگی حکومت نے غیر اردوداں راہل گپتا کو بنایا یو پی مدرسہ بورڈ کا نیا رجسٹرار، مدارس انتظامیہ میں تشویش

Jul 18, 2017 09:50 PM IST | Updated on: Jul 18, 2017 09:50 PM IST

الہ آباد : دینی مدارس کا الزام ہے کہ ریاستی حکومت مسلمانوں کے مذہبی معاملات میں مداخلت کر رہی ہے ۔ سلاٹر ہاؤس پر پابندی لگانے کے بعد مدرسہ بورڈ میں غیر مسلم کی تقرری سے ریاست کے اقلیتی طبقے کی تشویش میں مزید اضافہ ہو گیا ہے ۔

یو پی میں سلاٹر ہاؤس پر پابندی کے بعد ریاستی حکومت نے یو پی مدرسہ بورڈ میں بڑے پیمانے پر ردوبدل کیا ہے۔ ریاستی حکومت نے ایک غیر معروف شخص راہل گپتا کو مدرسہ بورڈ کا نیا رجسٹرار مقرر کیا ہے ۔ راہل گپتا کی تقرری سے دینی مدارس کے سامنے نئی مشکلات پیدا ہوگئی ہیں۔

یوگی حکومت نے غیر اردوداں راہل گپتا کو بنایا یو پی مدرسہ بورڈ کا نیا رجسٹرار، مدارس انتظامیہ میں تشویش

اب تک یو پی مدرسہ بورڈ حکومت سے امداد یافتہ دینی مدارس کا ایک ایسا مذہبی ادارہ تھا ، جس کے عہداران عام طور سے دینی امور کے جانکار ہوتے تھے۔ دینی مدارس کی نمائندہ تنظیم آل انڈیا ٹیچر ایسوسی ایشن مدارس عربیہ نے یوگی حکومت کے اس فیصلہ پر سخت تشویش کا اظہار کیا ہے ۔

دینی مدارس کی دلیل ہے کہ دینی امور اور زبان سے نا واقف رجسٹرار کے آ جانے سے کئی تکنیکی دشواریاں پیدا ہو رہی ہیں۔ ریاست کے معروف دینی ادارے جامعہ امامیہ انوار العلوم کا کہنا ہے کہ مدرسہ بورڈ کے رجسٹرار کے لئے کم از کم اردو کی جانکاری ضروری ہے ۔ تاکہ وہ مدارس کی اردو میں لکھی درخواستوں کا تصفیہ کر سکے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز