منفعت بخش عہدہ معاملہ: الیکشن کمیشن نے 21 آپ ممبران اسمبلی کی درخواست مسترد کی

Jun 24, 2017 11:57 AM IST | Updated on: Jun 24, 2017 12:43 PM IST

نئی دہلی۔ عام آدمی پارٹی کے 21 ممبران اسمبلی کو جھٹکا دیتے ہوئے الیکشن کمیشن نے آفس آف پرافٹ معاملے کو منسوخ کرنے کی ان کی درخواست مسترد کر دی ہے۔ اس معاملہ میں الیکشن کمیشن نے ایک ماہ پہلے ہی سماعت مکمل کر اپنا فیصلہ محفوظ رکھ لیا تھا۔ ایڈوکیٹ پرشانت پٹیل نے نیوز 18 ہندی سے بات چیت میں یہ معلومات دی۔ انہوں نے کہا، "الیکشن کمیشن نے کہا کہ آپ کے 21 رکن اسمبلی پارلیمانی سیکرٹری ہیں جو کہ فائدہ کا عہدہ ہے۔ اس لئے ان کی درخواست مسترد کر دی۔"

کیا ہے معاملہ

منفعت بخش عہدہ معاملہ: الیکشن کمیشن نے 21 آپ ممبران اسمبلی کی درخواست مسترد کی

عام آدمی پارٹی نے 13 مارچ 2015 کو اپنے 21 ممبران اسمبلی کو پارلیمانی سیکرٹری بنایا تھا۔ اس کے بعد 19 جون کو ایڈوکیٹ پرشانت پٹیل نے صدر کے پاس ان سیکرٹریز کی رکنیت منسوخ کرنے کے لئے درخواست دی۔ صدر کی جانب سے 22 جون کو یہ شکایت الیکشن کمیشن میں بھیج دی گئی۔ شکایت میں کہا گیا تھا کہ یہ 'فائدہ کا عہدہ' ہے لہذا آپ ممبران اسمبلی کی رکنیت منسوخ کی جانی چاہئے۔ اس سے پہلے مئی 2015 میں الیکشن کمیشن کے پاس ایک مفاد عامہ کی عرضی بھی ڈالی گئی تھی۔

عام آدمی پارٹی کے رہنما اروند کیجریوال نے کہا تھا کہ ممبران اسمبلی کو پارلیمانی سیکرٹری بن کر کوئی 'اقتصادی فائدہ' نہیں مل رہا۔ اس معاملے کو منسوخ کرنے کے لئے آپ کے ممبران اسمبلی نے الیکشن کمیشن میں درخواست لگائی تھی۔ وہیں صدر نے دہلی کی عام آدمی پارٹی کی حکومت کے پارلیمانی سیکرٹری بل کو منظوری دینے سے انکار کر دیا تھا۔ اس بل میں پارلیمانی سیکرٹری کے عہدے کو فائدہ کے عہدے کے دائرے سے باہر رکھنے کا التزام تھا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز