مدارس اسلامیہ کی الوطنی کا امتحان لے گی یوگی حکومت ، پرچم کشائی اورقومی ترانہ کی ویڈیوگرافی کی ہدایت

Aug 11, 2017 12:23 PM IST | Updated on: Aug 11, 2017 12:51 PM IST

لکھنو : اترپردیش کے بارہ بنکی میں آر ٹی ای کا بہانہ بناکر مدارس اسلامیہ کو بند کرنے کا نوٹس تھمانے کے بعد اب یوگی حکومت نے مدارس کی حب الوطنی کا امتحان لینا کا منصوبہ بنایاہے، جس کی چوطرفہ تنقید کی جارہی ہے۔ یوگی حکومت نے ریاست کے تمام مدارس میں اس مرتبہ یوم آزادی کے موقع پر ہونے والے پروگراموں کی ویڈیوگرافی کرانے کی ہدایت جاری کی ہے۔ یہ پہلا موقع ہے جب ایسی ہدایات جاری کی گئی ہیں۔

بتایا جارہا ہے کہ ان ہدایات کے پس پشت حکومت حکومت کا مقصد قومی تہوار کو لے کر مدارس کی حقیقت کا پتہ لگانا ہے۔ مگر یوپی مدرسہ بورڈ کی جانب سے جاری اس حکم کی مخالفت بھی تیز ہوگئی ہے۔ مدرسہ تنظیموں نے کہا ہے کہ یہ بدقسمتی کی بات ہے کہ انہیں شک کی نظروں سے دیکھا جا رہا ہے۔

مدارس اسلامیہ کی الوطنی کا امتحان لے گی یوگی حکومت ، پرچم کشائی اورقومی ترانہ کی ویڈیوگرافی کی ہدایت

file photo

مدرسہ کونسل بورڈ کی جانب سے 3 اگست کو ضلع اقلیتی افسر کو ایک خط بھیجا گیا ہے۔ اس میں ہدایت دی گئی ہے کہ یوم آزادی پر صبح آٹھ بجے پرچم کشائی اور قومی ترانہ ہوگا ۔ صبح آٹھ بج کر 10 منٹ پر شہیدوں کو خراج عقیدت پیش کیا جائے گا۔ ان تمام پروگراموں کی فوٹوگرافی اور ویڈیوگرافی کراکر ضلع کے اقلیتی افسر کو سونپنے کا بھی حکم دیا گیا ہے۔

ادھر مدرسہ مینیجر حاجی سید تهوور حسین نے کونسل کی طرف سے جاری خط کی منشا پر سوالات کھڑے کئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جنگ آزادی میں مدرسہ اور یہاں کے اساتذہ کو نمایاتعاون رہا ، اس کے باوجود مدرسوں کو شک کی نگاہ سے دیکھا جانا بدقسمتی اور قابل مذمت ہیں۔

آل انڈیا ٹیچرس ایسوسی ایشن مدارس عربیہ گورکھپور شاخ کے جنرل سکریٹری حافظ نظر عالم قادری نے کہا کہ حکم نامہ کے مطابق صبح 8 بجے پرچم کشائی اور قومی ترانہ، صبح 8.10 بجے سے جنگ آزادی کے شہیدوں کو خراج تحسین ،مدارس کے طلبہ و طالبات کی طرف سے قومی گیت و دیگر ثقافتی پروگراموں کا اہتمام کرنے کے ساتھ ساتھ ان کی فوٹو گرافی اور ویڈیوگرافی کرا نے کی بھی ہدایت جاری کی گئی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ یہ بات جگ ظاہر ہے کہ مدارس میں ملک سے محبت اور بھائی چارے کا درس دیا جاتاہے ۔ قومی تہواروں پر خوبصورت پروگرام منعقد ہوتے ہیں ، لیکن جس طرح سے ہدایات جاری کی گئی ہیں ، اس سے کہیں نہ کہیں حکومت کی نیت پر سوال ضرور کھڑا ہوتا ہے ۔

خیال رہے کہ اترپردیش میں آرٹی ای ایکٹ 2009کا حوالہ دے کر سرکاری محکمہ کی جانب سے دینی مدارس کو فوری طور سے بند کرنے کا نوٹس دیا جارہا ہے۔یہ معاملہ اس وقت سامنے آیا جب چند مدارس کے ذمہ داروں نے جمعیۃ علما ء ہند سے رابطہ کرکے تعاون کی گزار ش کی۔ جاری پریس ریلیز کے مطابق جمعیۃ علماء ہند کے صد دفتر کو نوٹس کی چند کاپیاں موصول ہوئیں، جن کے مطابق یہ معاملہ بارہ بنکی ضلع کا ہے ، جہاں مدرسہ حفصہ للبنات نندورہ اور مدرسہ سراج العلوم کتوری کلاں کے ذمہ داروں کو بلاک ایجوکیشنل آفسرنے آرٹی ایکٹ باب4کی دفعہ 19-1کا حوالہ دے کر حکم دیا ہے کہ فوری طور سے اپنی درس گاہوں کو بند کریں اور اس کی اطلاع بلاک افسر سندیپ کمار ورما کو دیں ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز