سہارنپور میں شوبھا ياترا کے دوران پھر تشدد ، فائرنگ میں ایک کی موت، کئی زخمی، سیکورٹی سخت

May 05, 2017 08:55 PM IST | Updated on: May 05, 2017 08:56 PM IST

سہارنپور : اترپردیش کے سہارنپور میں آج مہارانا پرتاپ جینتی پر شوبھاياترا میں ڈی جے بجانے کو لے کر ٹھاکر اور دلتوں کے درمیان تنازع ہو گیا۔ اس دوران پتھراؤ، آتش زنی اور فائرنگ کا بھی واقعہ پیش آیا ، جس میں ایک شخص کی موت ہو گئی ہے، جبکہ نصف درجن زخمیوں میں ایک پولیس کا کوتوال بھی شامل ہیں۔ اس واقعہ کے بعد موقع پر ارد گرد کے تھانوں کی پولیس اور پی اے سی طلب کرلی گئی ہے۔

خیال رہے کہ شبيرپر گاؤں میں مہارانا پرتاپ کی جینتی پر شوبھا یاترا نکالی جارہی تھی کہ ٹھاکر اور دلتوں کے درمیان ہنگامہ ہو گیا۔ اس کے بعد آتش زنی کے بعد مندر میں توڑپھوڑ، پتھراؤ اور فائرنگ کے واقعات پیش آئے ۔ تشدد میں ٹھاکر برادری سے ایک نوجوان کی موت ہو گئی جبکہ دیوبند کوتوال چمن سنگھ چاوڑا سمیت کئی زخمی ہو گئے ہے۔

سہارنپور میں شوبھا ياترا کے دوران پھر تشدد ، فائرنگ میں ایک کی موت، کئی زخمی، سیکورٹی سخت

خبروں کے مطابق شوبھا یاترا کے ساتھ ٹھاکر برادری کے لوگ جب بستی سے نکل رہے تھے تو سنت روی داس مندر کے پاس ڈی جے بجانے کی دلتوں نے مخالفت کی، جس بات پر دونوں فریقوں میں تنازع ہو گیا اور دیکھتے ہی دیکھتے پتھراؤ شروع ہو گیا۔ ٹھاکروں کی جانب سے سنت روی داس مندر میں توڑپھوڑ شروع کر دی گئی۔ علاوہ ازیں ڈاکٹر امبیڈکر کے مجسمہ کو بھی توڑ دیاگیا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز