اپوزیشن نے کی بنارس ہندو یونیورسیٹی واقعہ کی مذمت کی،مودی نے کی یوگی سے بات

مسٹر مودی کے علاوہ بی جے پی کے صدر امت شاہ نے بھی مسٹر یوگی سے اس سلسلے میں بات کی جس پر مسٹر یوگی نے انہیں یقین دہانی کرائی کہ اس بارے میں سبھی ضروری قدم اٹھائے جائیں گے۔

Sep 26, 2017 09:05 AM IST | Updated on: Sep 26, 2017 09:08 AM IST

نئی دہلی۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے بنارس ہندی یونیورسٹی (بی ایچ یو) میں پیش آنے والے واقعہ کے معاملے میں خاموشی توڑتے ہوئے اترپردیش کے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ سے بات کی اور اس معاملے کو فوراً حل کرنے کا حکم دیا جب کہ کانگریس اور دیگر اپوزیشن پارٹیوں نیز طلباء تنظیموں نے اس واقعہ کی سخت مذمت کرتے ہوئے بی ایچ یو کے وائس چانسلر کو فوراً برخاست کرنے اور معاملے کی سپریم کورٹ کے جج سے جانچ کرانے کا مطالبہ کیا۔ مسٹر مودی کے علاوہ بی جے پی کے صدر امت شاہ نے بھی مسٹر یوگی سے اس سلسلے میں بات کی جس پر مسٹر یوگی نے انہیں یقین دہانی کرائی کہ اس بارے میں سبھی ضروری قدم اٹھائے جائیں گے۔ دریں اثناء کئی طلباء اور سماجی تنظیموں نے بھی اس واقعہ کے خلاف راجدھانی میں کئی مقامات پر احتجاجی مظاہرہ کیا ۔

بی جے پی کے سابق صدر اور مرکزی وزیر نتن گڈکری نے کل یہاں بی جے پی کے قومی ایگزیکٹیوں کی میٹنگ میں منظور کی گئی سیاسی قرار داد کی اطلاع دینے کے لیے منعقد پریس کانفرنس میں صحافیوں سے کہا کہ مسٹر مودی اور مسٹر شاہ نے بی ایچ یو کے مسئلے پر مسٹر یوگی سے بات کی ہے اور انہوں نے ضروری قدم اٹھانے کا یقین دلایا ہے۔

اپوزیشن نے کی بنارس ہندو یونیورسیٹی واقعہ کی مذمت کی،مودی نے کی یوگی سے بات

مسٹر مودی کے علاوہ بی جے پی کے صدر امت شاہ نے بھی مسٹر یوگی سے اس سلسلے میں بات کی جس پر مسٹر یوگی نے انہیں یقین دہانی کرائی کہ اس بارے میں سبھی ضروری قدم اٹھائے جائیں گے۔

دریں اثنا، کانگریس نے بی ایچ یو میں سیکورٹی کا مطالبہ کرتے ہوئے مظاہرہ کر رہی طالبات پر پولیس لاٹھی چارج کی مذمت کرتے ہوئے صدر جمہوریہ رام ناتھ کووند سے یونیورسٹی کے وائس چانسلر کو فوراً برخاست کرکے سپریم کورٹ کے جج سے اس معاملے کی جانچ کرانے کا مطالبہ کیا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز