ای وی ایم سے نہیں بیلٹ پیپر سے ہی انتخابات کرائے جائیں: اپوزیشن کا مطالبہ

Apr 05, 2017 04:16 PM IST | Updated on: Apr 05, 2017 04:16 PM IST

نئی دہلی۔  اپوزیشن جماعتوں نے الیکٹرانک ووٹنگ مشین (ای وی ایم) کے ذریعہ انتخابات میں رکاوٹ اور بے ضابطگی کا خدشہ ظاہر کرتے ہوئے آج راجیہ سبھا میں اس بات پر زور دیا کہ مدھیہ پردیش میں حال ہی میں ان مشینوں کی جانچ کے دوران جو انکشافات ہوئے ہیں ان کے پیش نظر مستقبل میں تمام انتخابات بیلٹ پیپر سے کرائے جائیں۔ ڈپٹی چیئرمین پی جے کورین نے کہا کہ اپوزیشن کو یہ موضوع یہاں اٹھانے کے بجائے الیکشن کمیشن کے سامنے اٹھانا چاہئے۔ کانگریس، بہوجن سماج پارٹی اور سماج وادی پارٹی کے ارکان نے صدر نشیں کے قریب نعرے بازی کی جس سے کچھ دیر کے لئے ایوان کی کارروائی ملتوی بھی کرنی پڑی۔ ادھر حکومت نے کہا کہ ایوان میں اس مسئلے پر تفصیل سے بحث ہو چکی ہے اور ای وی ایم میں خرابی کے بارے میں کوئی حقیقت یا منطقی بات سامنے نہیں آئی اور اس احتجاج کے ذریعہ اپوزیشن الیکشن کمیشن اور عوام کے مینڈیٹ پر سوال اٹھا رہا ہے۔

کانگریس کے دگ وجے سنگھ، پرمود تیواری اور ایس پی کے پرو فیسر رام گوپال یادو اور نریش اگروال نے نوٹس دے کر اس معاملے پر ضابطہ 267 کے تحت بحث کرانے کا مطالبہ کیا تھا۔ ایوان میں حزب اختلاف کے رہنما غلام نبی آزاد نے کہا کہ منصفانہ انتخابات ہماری جمہوریت کی بنیاد ہیں اور منصفانہ انتخابات کو یقینی بنانے کے لئے کئی بار تبدیلیاں اور ترمیمات بھی کی گئی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ تین چاربرسوں سے ای وی ایم سے کرائے جا نیوالے انتخابات شک کے دائرے میں ہیں۔ حزب اختلاف کے رہنما نے الزام لگایا کہ ملک کی سب سے بڑے ریاست اترپردیش میں اے وی ایم سے بڑی صفائی سے چھیڑ چھاڑ کی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ ایوان کے ذریعے اپیل کرتے ہیں کہ ملک میں تمام ضمنی انتخابات، گجرات اور ہماچل پردیش میں اور مستقبل میں ہونے والے انتخابات اے وی ایم کے بجائے بیلٹ پیپر سے کرائے جائیں۔

ای وی ایم سے نہیں بیلٹ پیپر سے ہی انتخابات کرائے جائیں: اپوزیشن کا مطالبہ

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز