ڈاکٹر شمس کمال انجم کو بابا غلام شاہ بادشاہ یونیورسٹی کا ممتاز محقق ایوارڈ

Dec 16, 2017 04:30 PM IST | Updated on: Dec 16, 2017 04:31 PM IST

راجوری۔  بابا غلام شاہ بادشاہ یونیورسٹی راجوری( جموں وکشمیر) نے یونیورسٹی کے صدر شعبۂ عربی ، اردو اور اسلامک اسٹڈیز ڈاکٹر شمس کمال انجم کو اپنا پہلا ’’ممتاز محقق ایوارڈ برائے 2017‘‘ دیا ہے۔ یہ ایوارڈ سند، ٹرافی اور دولاکھ روپے بطور ریسرچ گرانٹ پر مشتمل ہے۔ یہاں جاری ایک بیان کے مطابق ڈاکٹر انجم کو یہ ایوارڈ یونیورسٹی کے چودھویں یوم تاسیس کے موقع پر منعقد ایک تقریب میں دیا گیا۔ اس موقع پر ریاست کے کابینی وزیر نعیم اختر ، شیخ الجامعہ پروفیسر جاوید مسرت، رجسٹرار اور ڈین اکیڈمک افیئرس پروفیسر اقبال پرویز، ڈین اسٹوڈنٹ پروفیسر ایم اصغر اور ایم ایل اے راجوری قمر حسین چودھری بھی موجود تھے۔

خیال رہے کہ ریسرچ وتحقیق کے فروغ کے لیے اور طلبہ واساتذہ کی حوصلہ افزائی کی خاطر یونیورسٹی نے ہر سال ’’ممتاز محقق ایوارڈ ‘‘ دینے کا فیصلہ کیا تھا۔ اس سلسلے میں ادبیات، سوشل سائنس اور منجمنٹ زمرے کے سب سے پہلے ’’ممتاز محقق ایوارڈ ‘‘ کے لئے ڈاکٹر شمس کمال انجم کا نام منتخب کیا گیا۔ ڈاکٹر انجم کی دو درجن سے زائد تالیفات وتصنیفات وتراجم اور ایک سو سے زائد علمی وادبی مضامین کے علاوہ ’’جدید عربی ادب، جدید عربی شاعری، عربی نثر کا فنی ارتقاء، عربی تنقید کا سفر، تاریخ ادب عربی،بلاغت قرآن کریم، حدیث عرب وعجم اور تاریخ مدینہ منورہ‘‘ نامی کتابیں شائع ہوچکی ہیں۔ ان کا ایک نعتیہ مجموعہ بھی بلغ العلی بکمالہ کے عنوان سے منظر عام پر آچکا ہے۔

ڈاکٹر شمس کمال انجم کو بابا غلام شاہ بادشاہ یونیورسٹی کا ممتاز محقق ایوارڈ

تصویرمیں: شیخ الجامعہ پروفیسر جاوید مسرت، ریاستی کابینی وزیر جناب نعیم اختر،رجسٹرار اقبال پرویز ڈاکٹر شمس کمال انجم کو ایوارڈ تفویض کرتے ہوئے۔ ساتھ میں قمر حسین چودھری ایم ایل اے راجوری اورپروفیسر ایم اصغر ڈین اسٹودنٹ بھی دیکھے جاسکتے ہیں۔

اس موقع پر شیخ الجامعہ پروفیسر جاوید مسرت نے ا ظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ انہیں امید ہے کہ اس ایوارڈ کے آغاز سے یونیورسٹی کے اساتذہ وطلبہ مزید جوش وخروش کے ساتھ ریسرچ اور تحقیق میں کارہائے نمایاں انجام دیں گے اور آئندہ برسوں میں خود کو اس ایوارڈ کا مستحق بنائیں گے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز