راجیہ سبھا میں لٹکا تین طلاق سے متعلق بل ، اب اگلے سیشن میں ہوگا پیش

دسمبر میں لوک سبھا میں یہ بل پاس ہوگیا تھا ، جس میں فوری تین طلاق دینے کو جرم کے زمرہ میں رکھا گیا تھا ۔

Aug 10, 2018 11:24 AM IST | Updated on: Aug 10, 2018 03:18 PM IST

راجیہ سبھا میں جمعہ کو تین طلاق سے متعلق بل پیش ہونے کی امید تھی ، مگر وہ پیش نہیں کیا جاسکا ۔ اب اگلے سیشن میں اس کو پیش کیا جائے گا ، کیونکہ موجودہ سیشن کا آج آخری دن ہے ۔ چیئرمین وینکیا نائیڈو نے اراکین کو بتایا کہ تین طلاق بل ابھی نہیں لیا جائے گا کیونکہ اس پر لوگ متحد نہیں ہیں۔

خیال رہے کہ 29 دسمبر کو لوک سبھا میں یہ بل پاس ہوگیا تھا ، جس میں فوری تین طلاق دینے کو جرم کے زمرہ میں رکھا گیا تھا ۔ تین طلاق کی کئی شقوں پر اپوزیشن پارٹیوں کو اعتراض ہے ، جس کی وجہ سے بل پارلیمنٹ میں تنازع کا مرکز بنا ہوا ہے ۔

راجیہ سبھا میں لٹکا تین طلاق سے متعلق بل ، اب اگلے سیشن میں ہوگا پیش

علامتی تصویر

خیال رہے کہ گزشتہ روز حکومت نے تین طلاق سے متعلق بل میں تین ترامیم کی تھیں ۔ حکومت نے بل میں مجسٹریٹ کے ذریعہ ملزم شوہر کو ضمانت دیئے جانے اور مناسب شرائط پر مفاہمت کی شقوں کو شامل کیاہے ۔

گزشتہ روز کابینہ میٹنگ کےبعد قانون وانصاف کے وزیر روی شنکر پرساد نے صحافیوں کو بتایا تھا کہ پہلی ترمیم کے تحت اب ایف آئی آر درج کرانے کا حق خود متاثرہ بیوی ،اس سے خون کا رشتہ رکھنے والے افراد اور شادی کے بعد بنے رشتہ داروں کو ہی ہوگا ۔اس کے علاوہ بل میں مفاہمت کا التزام بھی ہے ۔

مسٹر پرساد نے یہ بھی بتایاتھا کہ مجسٹریٹ مناسب شرطوں پر شوہر اور بیوی کے مابین سمجھوتہ کراسکتاہے ۔ایک دیگر ترمیم ضمانت کے سلسلہ میں کی گئی ہے ۔اب مجسٹریٹ کو یہ اختیار دیاگیاہے کہ وہ متاثرہ کا موقف سننے کے بعد ملزم شوہر کو ضمانت دے سکتاہے ۔حالانکہ انھوں نے واضح کیاکہ یہ اب بھی غیر ضمانتی جرم برقرار ہے جس میں تھانہ سے ضمانت ملنی ممکن نہیں ہے ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز