بی آر ڈی میڈیکل کالج گورکھپور میں بچوں کی اموات کے سلسلہ میں الہ آباد ہائی کورٹ میں عرضی داخل

گورکھپور کے بی آر ڈی میڈیکل کالج میں بچوں کی موت کے سلسلے میں سماجی کارکن نوتن ٹھاکر نے الہ آباد ہائی کورٹ کی لکھنؤ بنچ میں مفاد عامہ کی عرضی آج داخل کی ہے۔

Aug 16, 2017 05:53 PM IST | Updated on: Aug 16, 2017 05:53 PM IST

لکھنؤ: گورکھپور کے بی آر ڈی میڈیکل کالج میں بچوں کی موت کے سلسلے میں سماجی کارکن نوتن ٹھاکر نے الہ آباد ہائی کورٹ کی لکھنؤ بنچ میں مفاد عامہ کی عرضی آج داخل کی ہے۔ عرضی گزار نے کہا ہے کہ ریاستی حکومت اور اس کی اتحادی پارٹیوں کی طرف سے آکسیجن کی کمی سے موت ہونے کا انکار کیا جا رہا ہے۔ جس سے ایسا پیغام گیا ہے کہ وہ کچھ چھپانا چاہتے ہیں اور بعض لوگوں کا دفاع کیا جا رہا ہے۔

محترمہ نوتن نے درخواست میں کہا ہے کہ لوگوں میں یہ تاثر پایا جاتا ہے کہ چیف سکریٹری کی زیر قیادت تفتیشی ٹیم حکومت کے سابقہ موقف ہی کی حمایت کرے گی۔ اس لئے اس کی عدالتی جانچ ہونی چاہیے تاکہ تمام حقائق سامنے آ سکیں اور کوئی مجرم شخص بچ نہ سکے۔ عرضی میں حکومت کو ایسی ہدایات دینے کے لئے بھی درخواست کی گئی ہے جس سے گورکھپور جیسا حادثہ دوبارہ نہ ہو سکے۔

بی آر ڈی میڈیکل کالج گورکھپور میں بچوں کی اموات کے سلسلہ میں الہ آباد ہائی کورٹ میں عرضی داخل

میڈیکل کالج کے ڈاکٹر کفیل خان کے ذریعہ پرائیویٹ پریکٹس کرنے کی بات سامنے آنے پر درخواست میں ہائی کورٹ کی طرف سے سرکاری ڈاکٹروں کے پرائیویٹ پریکٹس پر پابندی سے متعلق حکومت کے سابقہ احکامات پر مکمل عمل کرائے جانے کی بھی استدعاء کی گئی ہے۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز