الہ آباد ہائی کورٹ کے سامنے واقع مسجد کے خلاف عرضی ، سنی سینٹرل وقف بورڈ نے داخل کیا حلف نامہ

May 05, 2017 08:34 PM IST | Updated on: May 05, 2017 08:34 PM IST

الہ آباد : الہ آباد ہائی کورٹ کے عین سامنے واقع مسجد کے خلاف الہ آباد میں داخل کی گئی مفاد عامہ کی عرضی پر سنی سینٹرل وقف بورڈ نے کورٹ میں اپنا حلف نامہ داخل کر دیا ہے ۔ ہائی کورٹ سے تعلق رکھنے والے ایک وکیل ابھیشیک شکلا نے ہائی کورٹ مسجد کے خلاف عرضی داخل کی ہے ۔ درخواست میں کہا گیا ہے کہ ہائی کورٹ کی مسجد غیر قانونی طور سے سر کاری زمین پر بنائی گئی ہے ۔

واضح رہے کہ ہائی کورٹ کی مسجد میں گزشتہ پچاس برسوں سے نماز ادا کی جا رہی ہے۔ یہ مسجد مشہور مجاہد آزادی اور دستور ساز کمیٹی کے رکن سید محمد علی کاظمی مرحوم کی کوٹھی میں واقع ہے۔ چند برس پہلے یہ کوٹھی سپریم کورٹ کے حکم سے خالی کرا لی گئی تھی۔ اس کوٹھی کو منہدم کرکے اس پر ایڈوکیٹ جنرل کا صدر دفتر بنا دیا گیا ہے ۔

الہ آباد ہائی کورٹ کے سامنے واقع مسجد کے خلاف عرضی ، سنی سینٹرل وقف بورڈ نے داخل کیا حلف نامہ

تاہم بلڈنگ کی تعمیر کے وقت مقامی انتظامیہ نے مسجد کی اراضی کو الگ کر دیا تھا ۔ یہ مسجد بطور وقف سنی سینٹرل وقف بورڈ میں بھی درج ہے ۔ ہائی کورٹ نے وقف بورڈ اور مقامی انتظامیہ سے تفصیلات طلب کی ہیں ۔ اس پورے معاملہ کی سماعت دو ہفتے بعد شروع کی جائے گی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز