آسیان سربراہی اجلاس میں شرکت کیلئےوزیر اعظم منیلا روانہ، پی ایم مودی کا فلپائن کا یہ پہلا دورہ

وزیر اعظم نریندر مودی فلپائن میں ہو رہے پندرہویں آسیان- ہندوستان سربراہی کانفرنس اور بارہویں مشرقی ایشیا سمٹ میں شرکت کیلئے آج منیلا روانہ ہو گئے۔

Nov 12, 2017 01:08 PM IST | Updated on: Nov 12, 2017 01:08 PM IST

نئی دہلی: وزیر اعظم نریندر مودی فلپائن میں ہو رہے پندرہویں آسیان- ہندوستان سربراہی کانفرنس اور بارہویں مشرقی ایشیا سمٹ میں شرکت کیلئے آج منیلا روانہ ہو گئے۔وزارت خارجہ کے ترجمان رويش کمار نے مسٹر مودی کی روانگی کو 'ایکٹ ایسٹ پالیسی' کی طرف ایک اور مضبوط قدم قرار دیا۔مسٹر مودی کایہ پہلا فلپائن دورہ ہے اور وہ ان کانفرنسوں میں 14 نومبر کو چوتھی بار شرکت کریں گے جن میں آسیان کے دس اور مشرقی ایشیا سمٹ کے رکن 18 ممالک کے سربراہان مملکت آ رہے ہیں۔ان لیڈروں میں چین، جاپان، امریکہ، جنوبی کوریا، آسٹریلیا، نیوزی لینڈ وغیرہ ممالک کے صدر یا وزیر اعظم شامل ہیں۔

وزیر اعظم کا یہ دورہ فلپائن کے صدر روڈریگو دوتیرتے کی دعوت پر ہو رہاہے۔ مسٹر مودی کی اس موقع پر صدر دیترتے کے ساتھ ایک دو طرفہ میٹنگ ہو گی جس میں دونوں ممالک کے درمیان زراعت سمیت مختلف شعبوں میں تعاون کے کچھ معاہدے بھی ہوں گے۔اس موقع پر وزیر اعظم کی دنیا کے کئی دیگر رہنماؤں کے ساتھ بھی دو طرفہ میٹنگیں بھی ہوں گی۔وزارت خارجہ کے حکام کے مطابق نومبر 2014 میں میانمار میں منعقد بارہویں آسیان-ہندوستان سربراہی اجلاس اور نویں مشرقی ایشیا سمٹ میں مسٹر مودی کی 'ایکٹ ایسٹ پالیسی' کے اعلان کے بعد آسیان اور ہندوستان پیسیفک کے علاقے کے ساتھ ہندوستان کے تعلقات میں مزید گرم جوشی آئی ہے۔

آسیان سربراہی اجلاس میں شرکت کیلئےوزیر اعظم منیلا روانہ، پی ایم مودی کا فلپائن کا یہ پہلا دورہ

آسیان کی گولڈن جبلی تقریب کے موقع پر اس سال اس سربراہی کانفرنس کی ہندوستان کیلئے خاص اہمیت ہے۔ یہ آسيان قائم ہونے کی 25 ویں سالگرہ ہے۔ یہ ہندوستان آسیان شرکت کا 15 واں اور ہندوستان آسیان اسٹریٹجک پارٹنرشپ کا پانچواں سال ہے۔مسٹر مودی نے اپنے فلپائن دورہ کے موقع پر جاری بیان میں کہا کہ انہیں یقین ہے کہ منیلا کے ان کے دورے سے ہندوستان کے فلپائن کے ساتھ دو طرفہ تعلقات مضبوط ہوں گے اور آسیان کے ساتھ سیاسی ،سلامتی ، اقتصادی اور سماجی و ثقافتی تعاون میں مزید اضافہ ہوگا۔ آسیان کاروبار اور سرمایہ کاری سربراہی اجلاس سے ہمارے آسیان ممالک کے ساتھ کاروباری تعلقات کو فروغ ملے گا۔

انہوں نے کہا-’’میں 12 نومبر سے تین دن تک منیلا کے دورے پر رہوں گا۔ یہ میرا فلپائن کا پہلا دو رہ ہو گا جہاں میں آسیان- ہندوستان اور مشرقی ایشیا اجلاس میں حصہ لوں گا۔ ان کانفرنسوں میں میری شرکت ہندوستاان کے آسیان ممالک بالخصوص ایشیا پیسیفک کے علاقے کے ممالک کے ساتھ قریبی تعلقات کے قرارداد كا اظہار کرتا ہے ،جو میری حکومت کی 'ایکٹ ایسٹ پالیسی' کے مطابق ہے۔ "حکام کے مطابق وزیر اعظم مشرقی ایشیا سمٹ نے کے بعد ’ریجنل کمپری ہینسیو اکنامک پارٹنر شپ‘ (آر سی ای پی) مذاکرات پر رہنماؤں کی ایک میٹنگ اور آسیان کاروبار اور سرمایہ کاری سربراہی اجلاس میں بھی شامل ہوں گے۔ انہوں نے وزیر اعظم کے سفر کے پروگرام کی معلومات دیتے ہوئے بتایا کہ مسٹر مودی آج شام تقریباً پانچ بجے منیلا پہنچیں گے جہاں ان کا شاندار استقبال کیا جائے گا۔ وہ صدر دیترتے کی جانب سے ڈنر میں شرکت کریں گے جس میں تمام مہمان رہنما شامل ہوں گے۔

مسٹر مودی کل ہندوستان فلپائن دو طرفہ اجلاس میں شرکت کرنے کے علاوہ کئی دوسرے رہنماؤں سے بھی الگ الگ ملاقاتیں کریں گے۔ وہ منیلا واقع بین الاقوامی رائس ریسرچ انسٹی ٹیوٹ اور مہاویر فلپائن فاؤنڈیشن کا بھی دورہ کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ بین الاقوامی دھان ریسرچ انسٹی ٹیوٹ نے سائنسی تحقیق اور ترقی کے ذریعے دھان کی بہتر اقسام تیار کیں ہیں اور غذائی بحران کے مسائل کے حل میں مدد کی ہے۔ اس ادارے میں بڑی تعداد میں ہندوستانی سائنسداں کام کر رہے ہیں اور اس علاقے کے ریسرچ ایند ڈیولپمنٹ میں مدد دے رہے ہیں۔وہ کل شام کو فلپائن میں ہندوستان کے سفیر جےديپ مجمدار کی طرف سے منعقد استقبالیہ تقریب میں ہندوستانیوں سے خطاب کریں گے۔وزیر اعظم 14 نومبر کو ہندوستان آسیان سربراہی اجلاس اور مشرقی ایشیا سمٹ میں شرکت کریں گے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز