وزیر اعظم کا دورہ اسرائیل، دو طرفہ تعلقات کے نئے باب کھلنے کی توقع

Jul 03, 2017 05:54 PM IST | Updated on: Jul 03, 2017 06:49 PM IST

نئی دہلی۔  وزیر اعظم نریندر مودی کا کل سے اسرائیلی دورہ  ایک طرف جہاں دونوں ممالک کے درمیان 25 سال کے سفارتی تعلقات کو یادگار بنائے گا وہیں اس دورے سے دو طرفہ تعلقات کے نئے باب کھلنے کی توقع ہے۔ وزارت خارجہ کے ایک اعلان میں کہا گیا ہے کہ "اس دورے میں وزیر اعظم اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو کے ساتھ باہمی مفاد کے تمام معاملات پرتفصیلی بات چیت کریں گے اور صدر رولن سے بھی ملیں گے"۔ کسی ہندستانی وزیر اعظم کا یہ پہلا دورہ اسرائیل ہے ۔ وہاں مسٹر مودی تل ابیب میں ایک تقریب میں ہندستانی کمیونٹی سے خطاب بھی کریں گے اور حیفہ میں ہندستانی قبرستان میں ہندوستانی فوجیوں کو خراج عقیدت پیش کریں گے۔

ہندستان نے 1992 میں اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات قائم کئے جس کے بعد سے یہ تعلق ایک کثیر جہتی شراکت میں تبدیل ہوتا گیا۔ وزارت خارجہ نے گزشتہ ہفتے کہا تھا کہ"یہ سال دونوں ممالک کے 25 سال کے سفارتی تعلقات کا یاد گار سال ہے ۔اس موقع پر وزیر اعظم کے دورے سے باہمی دلچسپی کے شعبوں میں گہری شراکت کی حوصلہ افزائی ہوگی ‘‘۔

وزیر اعظم کا دورہ اسرائیل، دو طرفہ تعلقات کے نئے باب کھلنے کی توقع

وزیر اعظم نریندر مودی: فائل فوٹو

واضح ر ہے کہ اسرائیل۔ فلسطین تعلقات اور جیو اسٹریٹجک حالات پر اس کے اثر کی وجہ سے ہندستان کی سابقہ حکومتوں نے کسی حد تک اسرائیلی اسٹیبلشمنٹ سے فاصلہ رکھنے کی کوشش کی۔ وزیر اعظم مودی اور ان کی پارٹی بی جے پی نے بہر حال اسرائیل کی فوجی اور تکنیکی مہارت کی ہمیشہ تعریف کی ہے۔ ہندستان میں اسرائیل کے سفارت خانے کے ترجمان، اويگیل اسپارا نے مودی کے دورے کو "اہمیت کا حامل " بتایا اور امید ظاہر کی کہ اس دورے سے دونوں ممالک کے درمیان بڑھتی ہوئی شراکت داری کو مہمیز لگے گی۔

ریلیز کے مطابق اسرائیل نے اپنے وزیر اعظم بنیامین نیتن یاہو کی دعوت پر اسرائیل کے دورے کے لئے گرمجوشی سے وزیر اعظم نریندر مودی کا خیر مقدم کیا ہے۔ اس سوال پر کہ کیا ہند۔ اسرائیل بڑھتے تعلقات کا مسلم دنیا میں فلسطین اور دیگر ممالک کے ساتھ ہندستان کے تعلقات پر اثر پڑے گا، وزارت خارجہ میں مغربی ایشیا شمالی افریقہ کے جوائنٹ سیکرٹری بالا بھاسکر نے صحافیوں کو بتایا  کہ ، " ہر ملک کے ساتھ ہمارا تعلق دیگر ممالک کے ساتھ تعلقات سے آزاد ہے۔ہر رشتہ مختلف ہے "۔ ہندستان کے وزیر اعظم کے اسرائیل کے دورے سے دونوں ممالک کی دلچسپی کافی بڑھی ہوئی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز