ہندوستان کو ابھرتی ہوئی عالمی طاقت کے طور پر دیکھ رہی ہے عرب دنیا

وزیر اعظم نریندر مودی کا چا ر عرب ممالک فلسطین ‘ اردن‘ متحدہ عرب امارات اور عمان کے حالیہ دورہ کے دوران جو والہانہ استقبال ہوا اور مختلف مواقع پر جس اپنایت اور خلوص کا مظاہرہ کیا گیا

Feb 13, 2018 08:58 PM IST | Updated on: Feb 13, 2018 08:58 PM IST

نئی دہلی: وزیر اعظم نریندر مودی کا چا ر عرب ممالک فلسطین ‘ اردن‘ متحدہ عرب امارات اور عمان کے حالیہ دورہ کے دوران جو والہانہ استقبال ہوا اور مختلف مواقع پر جس اپنایت اور خلوص کا مظاہرہ کیا گیا وہ اس بات کا ثبوت ہے کہ عرب دنیا ہندوستان کو ایک ابھرتی ہوئی عالمی طاقت کے طور پر دیکھ رہی ہے۔ وزیر اعظم مودی کے ساتھ دورے پر گئے وزارت خارجہ کے ایک اعلی افسر نے بتایا کہ ان تمام ملکوں کے سربراہان مملکت اور رہنماوں نے وزیر اعظم کا جس والہانہ انداز میں اور خلوص کے ساتھ استقبال کیا وہ نہایت غیر معمولی تھا اور ایسی گرمجوشی شاذ و نادر ہی دیکھنے کو ملتی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ اردن میں بالعموم غیر ملکی رہنماوں کا وزیر اعظم کے دفتر میں استقبال کیا جاتا ہے تاہم اردن کے شاہ عبداللہ دوئم نے وزیر اعظم مودی کا اپنے شاہی محل میں خود استقبال کیا ۔ حتی کہ فلسطین جانے کے لئے اپنے ذاتی ہیلی کاپٹر بھی انہیں دئے۔فلسطین کا دورہ یوں بھی تاریخی اہمیت کا حامل تھا کیوں کہ یہ کسی ہندوستانی وزیر اعظم کا نبیوں کی سرزمین پر پہلا دورہ تھا۔فلسطین میں وزیر اعظم مودی کو ملک کا سب سے اعلی اعزاز ’طوق کبیر‘ سے نوازا گیا۔فلسطینیوں نے یہ اعزاز اب تک صرف چند ایک عالمی رہنماوں کو ہی دیاہے۔ ذرائع نے بتایا کہ فلسطینی صدر اور وہاں کے عوام نے وزیر اعظم مودی کے ساتھ جس دلی قربت کا اظہار کیا وہ دونوں کے درمیان قدیم اور مستحکم باہمی تعلقات کا واضح ثبوت ہے۔

ہندوستان کو ابھرتی ہوئی عالمی طاقت کے طور پر دیکھ رہی ہے عرب دنیا

وزیر اعظم مودی ۔ فائل فوٹو

متحدہ عرب امارات میں بھی وزیر اعظم مودی کا غیر معمولی استقبال کیا گیا ۔ ولی عہد اور شاہی خاندان کے دیگر ہندوستانی وزیر اعظم کا خیر مقدم کرنے کے لئے ہوائی اڈے پر افراد بہ نفس نفیس موجود تھے ۔ولی عہد شیخ محمد بن زائد النہیان اپنی کار میں خود اپنے ساتھ وزیر اعظم مودی کو لے کر گئے۔انہوں نے بعد میں وزیر اعظم کے اعزاز میں دی گئی ضیافت کے دوران کہا کہ ہندوستان ان کا قریبی دوست ہے اور وزیر اعظم مودی ابوظبی کو اپنا دوسرا گھر سمجھ سکتے ہیں۔

وزارت خارجہ کے ذرائع نے بتایا کہ عمان کے دورے کے دوران سلطان قابوس بن سعید آل سعید نے وزیر اعظم مودی کے ساتھ مسلسل پانچ گھنٹے گذارے اور باہمی دلچسپی کے علاوہ متعدد علاقائی اور عالمی امور پر تبادلہ خیال کیا۔اذرائع کے مطابق سلطان قابوس نے وزیر اعظم مودی کے ساتھ ذاتی گفتگو میں ہندوستان کے ساتھ اپنے قریبی تعلقات کا ذکر کرتے ہوئے بتایا کہ جب ان کے دادا ممبئی میں قیام پذیر تھے تو وہ اکثر ممبئی جایا کرتے تھے۔

ذرائع نے بتایا کہ ان دوروں کے دوران چاروں ممالک نے ہندوستان کے ساتھ مختلف شعبوں میں باہمی تعلقات کو مستحکم کرنے کے لئے جو معاہدے کئے ان سے یہ اندازہ لگانا مشکل نہیں کہ عرب دنیا اب ہندوستان کو ایک ابھرتی ہوئی عالمی طاقت کے طورپر دیکھ رہی ہے اور اس کے ساتھ باہمی تعلقات کو مستحکم کرنا چاہتی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز