چندی گڑھ چھیڑ خانی معاملہ: پولیس بی جے پی سربراہ کے بیٹے کو بچا رہی ہے: کانگریس

Aug 07, 2017 04:06 PM IST | Updated on: Aug 07, 2017 04:07 PM IST

نئی دہلی۔  کانگریس نے آج الزام لگایا کہ مرکزی حکومت کے اشارے پر چنڈی گڑھ پولیس اپنا بیان بدل کر ہریانہ ریاستی بھارتیہ جنتا پارٹی کے لیڈر کے بیٹے کو ایک عورت کے اغوا کے معاملے میں بچا رہی ہے۔ کانگریس کے میڈیا سیل کے سربراہ رندیپ سنگھ سرجے والا نے آج  یہاں نامہ نگاروں سے کہا کہ چنڈی گڑھ پولیس اور چنڈی گڑھ انتظامیہ مرکزی حکومت کے زیر انتظام ہے اور مرکز کی بی جے پی حکومت کے اشارے پر ہی ہریانہ بی جے پی سربراہ کے بیٹے پر عورت کے اغوا کے معاملے کو تبدیل کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مجسٹریٹ کو دیئے گئے بیان میں بی جے پی سربراہ کے بیٹے اور اس کے ساتھی نے رات کو تقریباً سات کلومیٹر تک اس عورت کا تعاقب کیا اور اس کو اغوا کرنے کی کوشش کی۔

بیان دینے کے بعد چنڈی گڑھ پولیس کے ایک سینئر افسر نے پریس کانفرنس میں کہا کہ یہ اغوا کا معاملہ ہے اور ان نوجوانوں کو اس میں 10 برس قید کی سزا ہوسکتی ہے۔ شام کے وقت پولیس نے مرکزی حکومت کے دباؤ میں اپنا بیان بدل دیا۔ حیرانی کی بات یہ ہے کہ پولیس سی سی ٹی وی کے فوٹیج کو بھی غائب بتا رہی ہے۔ مسٹر سرجے والا نے الزام لگایا کہ چنڈی گڑھ پولیس کے اسی افسر نے دن میں دیا اپنا بیان شام کو بدل دیا اور کہا کہ یہ اغوا کا معاملہ نہیں ہے۔ اس سے واضح ہے کہ پولیس کو مرکزی حکومت سے بیان بدلنے کے احکامات ملے تھے اور نوجوانوں کے خلاف اغوا کی دفعات میں معاملہ درج نہیں کیا گیا۔

چندی گڑھ چھیڑ خانی معاملہ: پولیس بی جے پی سربراہ کے بیٹے کو بچا رہی ہے: کانگریس

کانگریس لیڈر رندیپ سنگھ سرجیوالا: فائل فوٹو

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز