پردیومن قتل کیس : وکیل کا انکشاف ، ملزم کنڈکٹر کو نشے کا انجکشن دیا گیا ، ملزم کی بیوی اور بھابھی نے کہی یہ بات ؟

Sep 15, 2017 02:37 PM IST | Updated on: Sep 15, 2017 02:37 PM IST

گروگرام : گروگرام کے ریان انٹرنیشنل اسکول میں سات سال کے بچہ پردیومن کے قتل کے الزام میں گرفتار کنڈکٹر اپنے بیان سے منحرف ہوگیا ہے۔ ملزم نے اپنے وکیل موہت ورما کو بتایا کہ وہ بے قصور ہے اور اسے زبردستی اس کیس میں پھنسایا جارہا ہے۔

ملزم کنڈکٹر اشوک کے وکیل موہت ورما نے کہا کہ پولیس نے اشوک کو مار پیٹ اور کرنٹ کے جھٹکے لگاکر زبردستی بیان درج کروایا تھا۔ اشوک نے اپنے وکیل کو بتایا کہ اس سے زبردستی دستخط کروایا گیا اور جھوٹا مقدمہ درج کیا گیا ، ٹارچر کیا گیا اور اس کو نشے کا انجیکشن لگاکر میڈیا کے سامنے پیش کیا گیا۔

پردیومن قتل کیس : وکیل کا انکشاف ، ملزم کنڈکٹر کو نشے کا انجکشن دیا گیا ، ملزم کی بیوی اور بھابھی نے کہی یہ بات ؟

خیال رہے کہ 8 ستمبر کو ریان انٹرنیشنل اسکول میں سات سال کے پردیومن کا چاقو سے گلا کاٹ کر قتل کردیا گیا تھا۔ ابتدا میں اشوک نے اعتراف جرم کرلیا تھا اور کہا تھا کہ اس نے ہی پردیومن کا قتل کیا تھا۔

ادھر ملزم اشوک کی بیوی ممتا کے مطابق اس کی اشوک سے جیل میں پانچ سے سات منٹ ملاقات ہوئی ۔ اشوک نے اسے بتایا کہ اسے پولیس نے ٹارچر کیا اور اسے بری طرح زدو کوب کیا گیا۔ اس نے اپنی بیوی سے یہ بھی کہا کہ وہ بے قصور ہے اور اسے پھنسایا جارہا ہے۔

ملزم اشوک کی بھابھی کے مطابق پولیس کے ٹارچر کی وجہ سے اشوک نے اعتراف جرم کرلیا ۔ پرنسپل نے کہا تھا کہ یہ معاملہ بہت بڑھ گیا ہے ، تم اسے اپنے اوپر لے لو ، ہم تمہیں کچھ وقت بعد بچا لیں گے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز