نوٹ بندی سے ملک کی اقتصادی رفتار سست پڑ سکتی ہے : صدرجمہوریہ پرنب مکھرجی

Jan 05, 2017 08:11 PM IST | Updated on: Jan 05, 2017 08:11 PM IST

نئی دہلی : وزیر اعظم مودی کے ذریعہ 8 نومبر 2016 کو نافذ کئے گئے نوٹ بندی کے فیصلہ اور اس سے معیشت پر پڑنے والے اثر کو لے کر اب صدر پرنب مکھرجی نے بھی خدشہ ظاہر کیا ہے۔ صدر جمہوریہ کا کہنا ہے کہ اس فیصلے سے معیشت میں کچھ سستی آ سکتی ہے۔

پرنب مکھرجی نے جمعرات کو کہاکہ 'نوٹ بندی سے جہاں کالے دھن اور بدعنوانی کے خلاف کارروائی ہو رہی ہے، وہیں اس سے معیشت میں عارضی طور پر کچھ سستی آ سکتی ہے۔ غریبوں کی تکلیفوں کو دور کرنے کے معاملہ میں ہمیں زیادہ چوکنا رہنا ہوگا، کہیں ایسا نہ ہو کہ طویل مدتی ترقی کی امید میں ان کی یہ تکلیف ناقابل برداشت ہو جائے۔

نوٹ بندی سے ملک کی اقتصادی رفتار سست پڑ سکتی ہے : صدرجمہوریہ پرنب مکھرجی

قابل ذکر ہے کہ اس سے پہلے بھی کئی رپورٹوں میں نوٹ بندی کی وجہ سے معیشت کی رفتار سست ہونے کا خدشہ ظاہر کیا جا چکا ہے۔ ساتھ ہی ٹاٹا اسٹیل سمیت کئی کمپنیاں بھی کہہ چکی ہیں کہ اس فیصلے سے ان کا کاروبار متاثر ہوا ہے۔ دو دن پہلے ہی امریکہ کے ایک اہم ماہر اقتصادیات اسٹیو ایچ هانكے نے کہا تھا کہ ہندوستان میں 'نقد پر حملے سے جیسی امید تھی، اس نے معیشت کو کساد بازاری کے راستے پر دھکیل دیا ہے۔ هانكے نے اس کے ساتھ ہی کہا تھا کہ نوٹ بندی کی وجہ سے ہندوستان 2017 میں اقتصادی ترقی کے معاملہ میں قیادت کے پلیٹ فارم سے نیچے کھسک سکتا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز