صدارتی انتخابات : این ڈی اے امیدوار رام ناتھ کووند کی جیت یقینی ، ایس پی اور ٹی ایم سی لیڈروں کی کراس ووٹنگ

Jul 17, 2017 05:05 PM IST | Updated on: Jul 17, 2017 05:05 PM IST

نئی دہلی : ملک کے 14 ویں صدر کیلئے پارلیمنٹ ہاؤس اور ملک کی مختلف ریاستوں کی اسمبلیوں میں ووٹنگ شام پانچ بجے ختم ہوگئی ۔ اہم مقابلہ این ڈی اے امیدوار رام ناتھ كووند اور یو پی اے کی امیدوار سابق لوک سبھا اسپیکر میرا کمار کے درمیان ہے۔ تاہم اس الیکشن میں این ڈی اے امیدوار کی جیت یقینی مانی جارہی ہے ، کیونکہ کووند کو این ڈی کے علاوہ دیگر متعدد پارٹیوں کی بھی حمایت حاصل ہے ۔ علاوہ ازیں ترنمول کانگریس اور سماجوادی پارٹی کے بھی لیڈروں نے کراس ووٹنگ کی ہے۔

ممتا بنرجی کی ترنمول کانگریس نے میرا کمار کی حمایت کی تھی ، لیکن تریپورہ کے 6 ٹی ایم سی ممبران اسمبلی نے رام ناتھ كووند کو ووٹ دیا ۔ تریپورہ ممبر اسمبلی آشیش ساہا نے کہا کہ انہوں نے سی پی آئی (ایم)، کانگریس اور ٹی ایم سی کے جرائم کے خلاف احتجاج کے طور پر رام ناتھ كووند کو ووٹ دیا ہے۔

صدارتی انتخابات : این ڈی اے امیدوار رام ناتھ کووند کی جیت یقینی ، ایس پی اور ٹی ایم سی لیڈروں کی کراس ووٹنگ

یوپی میں ملائم کنبہ میں اختلاف صدارتی انتخابات میں بھی نظر آیا۔ اکھلیش کی اپیل کے باوجود شیوپال خیمہ نے کھلے عام کراس ووٹنگ کی۔ شیو پال یادو نے کہا کہ 'نیتا جی کے اشارے پر میں كووند کو ووٹ ڈال رہا ہوں اور بھی سماج وادی پارٹی کے دیگر اراکین اسمبلی اور ممبران پارلیمنٹ بھی كووند کی حمایت میں ووٹ ڈالیں گے۔ میرا کمار نے مجھ حمایت نہیں مانگی ، كووند نے مانگی تھی۔ كووند زیادہ سیکولر ہیں اور سماجوادی بھی ہیں ۔ پارٹی نے میری کوئی رائے نہیں لی، تو میں پارٹی کی بات کیوں تسلیم کروں ۔

مجلس اتحاد المسلمین کے صدر اور ممبر پارلیمنٹ اسد الدین اویسی نے کہا کہ صدر کے عہدے کے لیے وہ میرا کمار کی حمایت کررہے ہیں۔ تاہم ساتھ ہی ساتھ انہوں نے کہا کہ اس عہدہ کے لئے غیر کانگریسی امیدوار زیادہ بہتر ہوتا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز