بھیڑ کے ذریعہ پیٹ پیٹ کر قتل جیسے واقعات پر بے حد غصہ آتا ہے، خون کھولنے لگتا ہے میرا : پرینکا گاندھی

Jul 02, 2017 01:27 PM IST | Updated on: Jul 02, 2017 01:27 PM IST

نئی دہلی: پرینکا گاندھی واڈرا نے ہفتہ کو کہا کہ پیٹ پیٹ کر قتل کے واقعات سے مجھے بے حد غصہ آتا ہے اور میرا خون کھولنے لگتا ہے۔ نیشنل ہیرالڈ کی جانب سے یادگاری شمارہ کے اجرا کے موقع پر منعقدہ پروگرام سے الگ پرینکا سے پوچھا گیا تھا کہ پیٹ پیٹ کر قتل جیسے واقعات کو لے کر کیا ان کی بھی رائے اپنی ماں اور کانگریس صدر سونیا گاندھی اور صدر پرنب مکھرجی کی طرح ہی ہیں۔

پرینکا نے ایک چینل سے بات چیت میں کہا کہ میری رائے بھی پوری طور پر وہی ہے ۔ ان سے مجھے بے حد غصہ آتا ہے، جب میں ایسی چیزیں ٹی وی یا انٹرنیٹ پر دیکھتی ہوں تو میرا خون کھولنے لگتا ہے، مجھے بہت زیادہ غصہ آتا ہے، مجھے لگتا ہے کہ اس سے صحیح سوچ والے ہر ایک شخص کا خون كھولنا چاہئے۔

بھیڑ کے ذریعہ پیٹ پیٹ کر قتل جیسے واقعات پر بے حد غصہ آتا ہے، خون کھولنے لگتا ہے میرا : پرینکا گاندھی

خیال رہے کہ صدر پرنب مکھرجی اور کانگریس صدر سونیا گاندھی نے ہفتہ کو نیشنل ہیرالڈ کے یادگاری شمارہ کو لانچ کیا۔ اس پروگرام میں پرینکا گاندھی اور سابق وزیر اعظم منموہن سنگھ سمیت کئی اپوزیشن پارٹیوں کے لیڈران بھی موجود تھے۔ صدر جمہوریہ پرنب مکھرجی نے کہا کہ بھیڑ کے ذریعہ لوگوں کو جان سے مارنے کے واقعات پر سنجیدگی سے غور کرنے کی ضرورت ہے۔

اس موقع پر کانگریس صدر سونیا گاندھی نے موجودہ این ڈی اے حکومت کو بھی نشانہ بنایا۔ کانگریس صدر نے کہا کہ قانون پر عمل کروانے کی ذمہ داری جس پر ہے، وہ ان کی حمایت کر رہے ہیں، جو کیا کھائیں یا نہیں، کس سے محبت کریں اور کس سے نہیں، جیسی چیزوں پر زبردستی اپنے خیالات مسلط کررہے ہیں۔ سونیا گاندھی نے کہا کہ گھریلو بدانتظامی بھی خارجہ بدانتظامی کی طرح ایک بڑا چیلنج ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر اقتدار کے خلاف آواز نہیں اٹھائی گئی، تو پھر یہ ہماری رضامندی سمجھی جائے گی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز