جے این یو : شہلا رشید کو ٹویٹ کرنے پر ملا نوٹس ، 19 دسمبر کو پراکٹر کے سامنے پیش ہونے کی ہدایت

جواہر لال نہرو یونیورسٹی جے این یو نے طلبہ کارکن شہلا رشید سے کہا ہے کہ وہ ٹویٹر پر کئے گئے اپنے دعوں کی جانچ کیلئے پراکٹر کے سامنے پیش ہوں۔

Dec 14, 2017 11:25 PM IST | Updated on: Dec 14, 2017 11:25 PM IST

نئی دہلی : جواہر لال نہرو یونیورسٹی جے این یو نے طلبہ کارکن شہلا رشید سے کہا ہے کہ وہ ٹویٹر پر کئے گئے اپنے دعوں کی جانچ کیلئے پراکٹر کے سامنے پیش ہوں۔ شہلا رشید نے اپنے ٹویٹر پوسٹ میں یونیورسٹی کیمپس میں انٹرنیٹ سینسر شپ کی بات لکھی تھی ۔ یونیورسٹی کی جانب سے جانچ کئے جانے کو شہلا رشید اور دیگر طلبہ نے انوکھا قرار دیا ہے۔

ساتھ ہی ساتھ جے این یو طلبہ یونین کی سابق نائب صدر شہلا رشید نے کہا ہے کہ وہ 19 دسمبر کو پراکٹر کے سامنے پیش نہیں ہوں گی کیونکہ ان کے ٹویٹ کے سلسلے میں یونیورسٹی انتظامیہ جانچ کا اختیارنہیں رکھتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ممکنہ طور پر یہ پہلا نوٹس ہے جو کسی کو سوشل میڈیا پوسٹ کیلئے ملا ہے۔

جے این یو : شہلا رشید کو ٹویٹ کرنے پر ملا نوٹس ، 19 دسمبر کو پراکٹر کے سامنے پیش ہونے کی ہدایت

شہلا رشید نے چیف پراکٹر کے دفتر سے سات دسمبر کو جاری ہونے والے نوٹس کی تصویر بھی ٹویٹر پر پوسٹ کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ انہیں یہ نوٹس کل ای میل سے ملا۔ تاہم اس سلسلہ میں جے این یو کے چیف پراکٹر کوشل کمار اور رجسٹرار پرمود کمار نے فون کا جواب نہیں دیا۔

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز