جو کام سرسید احمد خاں انجام دے گئے، اسے الفاظ میں بیان نہیں کیاجاسکتا : دھیریندر سنگھ سچان

Mar 31, 2017 09:29 PM IST | Updated on: Mar 31, 2017 09:29 PM IST

علی گڑھ :جو کام سرسید احمد خاں انجام دے گئے اسے الفاظ میں بیان نہیں کیاجاسکتا۔انہوں نے جس وقت کالج قائم کیا شرحِ خواندگی کافی کم تھی اور کالج کا قیام کافی مشکل کام تھا۔ان خیالات کا اظہار سی ڈی او، علی گڑھ مسٹر دھیریندر سنگھ سچان نے سرسید دو صد سالہ تقریبات کے تحت’’ سرسید کی سیاسی فکر اور تعلیمی پالیسی‘‘ موضوع پر علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے ڈاکٹر بی آر امبیڈکر ہال میں منعقدہ پروگرام سے مہمانِ خصوصی کی حیثیت سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ سرسید نے انگریزوں سے مقابلہ کرنے کے لئے انگریزی تعلیم کے حصول اور انگریزوں کے طریقۂ کار کو اپنانے پرنہ صرف زور دیابلکہ اس سمت میں عملی کاوش بھی کی جس میں وہ کامیاب رہے ۔انہوں نے طلبأ سے اپیل کی کہ وہ اس ادارہ سے زیادہ سے زیادہ فائدہ اٹھاکر سرسید کے خوابوں کو تعبیر سے ہمکنار کریں۔

شعبۂ سیاسیات کے سربراہ پروفیسر اسمر بیگ نے کہاکہ سرسید نے ماڈرن ہونے کے باوجود اپنی شخصیت سے کوئی سمجھوتا نہیں کیا۔ وہ اپنی فکر، اپنے عمل اور تحریر میں جدید تھے لیکن باقی ہر چیز میں وہ ایک ہندوستانی مسلمان تھے اور سرسید کو پڑھنے کے بعد ہمیں زندگی میں آگے بڑھنے کا راستہ ملتا ہے۔پروگرام کوآرڈینیٹر پروفیسر شکیل صمدانی نے کہا کہ سرسی کی شخصیت کا جتنا مطالعہ کیاجاتا ہے اتنے ہی پہلو ہمیں ملتے ہیں۔ وہ ایک سچے محبِ وطن تھے اور ہندوستانیوں کو انگریزوں کے مقابل کھڑا کرنا چاہتے تھے۔ان کی سیکولر شبیہہ پر کسی کو کوئی شک نہیں ہونا چاہئے۔انہوں نے طلبأ سے اپیل کی کہ وہ سرسید کی فکر کو اپناکر اپنے ملک کوعالمی منظر نامہ پر اولین مقام دلانے کے لئے کام کریں۔

جو کام سرسید احمد خاں انجام دے گئے، اسے الفاظ میں بیان نہیں کیاجاسکتا : دھیریندر سنگھ سچان

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز