مودی کے وارانسی دورے سے قبل زبردست مظاہرہ، ’واپس جاؤ‘ کے نعرے لگے

مسٹر مودی پر ’جمہوری اقدار‘ کو نظر انداز کرتے ہوئے 'شخصی اظہار آزادی' اور ’اختلاف‘ کی آزادی پر حملے کرنے کا الزام لگاتے ہوئے کہا گیا، ’’کاشی کے عوام جمہوریت کا قتل برداشت نہیں کریں گے۔

Sep 21, 2017 08:51 AM IST | Updated on: Sep 21, 2017 08:51 AM IST

وارانسی۔ وزیر اعظم نریندر مودی کے 22 ستمبر سے دو روزہ وارانسی دورے سے پہلے کل اپوزیشن جماعتوں نے یکجہتی کا مظاہرہ کرتے ہوئے ان کے خلاف زبردست احتجاج کیا۔  مسٹر مودی پر ’جمہوری اقدار‘ کو نظر انداز کرتے ہوئے 'شخصی اظہار آزادی' اور ’اختلاف‘ کی آزادی پر حملے کرنے کا الزام لگاتے اپوزیشن رہنماؤں نے کہا، ’’کاشی کے عوام جمہوریت کا قتل برداشت نہیں کریں گے اور جمہوری حقوق کی حفاظت کی ملک گیر تحریک کی شروعات وزیراعظم کے پارلیمانی انتخابی حلقے سے ہوگی‘‘۔

مظاہرہ میں ریاست کے سابق وزیر مملکت سریندر پٹیل، سابق ایم پی راجیش مصر، رام كشن یادو، سابق ممبر اسمبلی اجے رائے، قانون ساز کونسل کے سابق رکن اروند سنگھ وغیرہ شامل ہوئے۔

مودی کے وارانسی دورے سے قبل زبردست مظاہرہ، ’واپس جاؤ‘ کے نعرے لگے

وزیر اعظم نریندر مودی: فائل فوٹو۔

کانگریس، سماجوادی پارٹی (ایس پی)، بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی)، عام آدمی پارٹی (آپ)، اپنا دل (کرشنا پٹیل گروپ) اور ہندوستانی کمیونسٹ پارٹی (سی پی آئی) کے کئی سابق ممبر پارلیمنٹ، سابق ممبر اسمبلی، ایم ایل سی ، پردیش کے سابق وزراء اور رہنماؤں کی قیادت میں ہزاروں کارکن بارش کے باوجود مظاہرہ میں شامل ہوئے۔‘‘

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز