بی جے پی میں وزیر اعلی کے چہرے کو لے کر گھمسان، كیشو- یوگی کے حامیوں نے کیا احتجاج

Mar 18, 2017 02:48 PM IST | Updated on: Mar 18, 2017 02:53 PM IST

لکھنئو۔ بی جے پی میں وزیر اعلی کے عہدے کو لے کر گھمسان ​​شروع ہو گیا ہے۔ یوپی میں سی ایم عہدے کی دوڑ میں مرکزی وزیر مملکت منوج سنہا کا نام سب سے آگے ہونے کی خبر کے درمیان بی جے پی کارکنوں نے کیشو پرساد موریہ کو وزیر اعلی بنائے جانے کی مانگ کو لے کر لکھنؤ میں احتجاجی مظاہرہ کیا۔ اس کے علاوہ بی جے پی رکن پارلیمنٹ آدتیہ ناتھ کو سی ایم بنائے جانے کی مانگ کو لے کر گورکھپور میں پارٹی کارکنوں نے مظاہرہ کیا۔ تاہم ہفتہ کو منوج سنہا نے خود کے وزیر اعلی بننے کی بات کو دوبارہ مسترد کر دیا۔ اس کے علاوہ یوپی بی جے پی انچارج اوم ماتھر وزیر اعظم کی رہائش گاہ پہنچے اور یوپی سی ایم عہدے کو لے کر بات چیت کی۔

بتا دیں کہ لکھنؤ کے لوک بھون میں ہفتہ کی شام 4.30 بجے ہونے والی بی جے پی قانون ساز پارٹی کی میٹنگ میں پارٹی کے ممبر اسمبلی اپنے لیڈر کا انتخاب کریں گے۔ اس کے بعد ہی گورنر سے مل کر حکومت بنانے کا دعوی پیش کیا جائے گا۔

بی جے پی میں وزیر اعلی کے چہرے کو لے کر گھمسان، كیشو- یوگی کے حامیوں نے کیا احتجاج

وزیر اعظم نریندر مودی کی موجودگی میں 19 مارچ کو لکھنؤ اسمرتی اپون میں دوپہر 2.15 بجے حلف برداری کی تقریب ہو گی۔ پہلے یہ تقریب شام کو 4.30 بجے ہونا تھی۔ لیکن جمعہ کی شام کو ایس پی جی افسران کی میٹنگ کے بعد اسے بدل دیا گیا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز