جنوبی کشمیر میں ڈی پی ایل پلوامہ پر فدائین حملہ، ایک پولیس اہلکار ہلاک، 6 دیگر زخمی

Aug 26, 2017 10:04 AM IST | Updated on: Aug 26, 2017 10:04 AM IST

سری نگر۔  جنوبی کشمیر کے ضلع پلوامہ میں جنگجوؤں نے ڈسٹرک پولیس لائنز پر فدائین حملہ کردیا ہے۔ طرفین کے مابین جاری گولہ باری میں تاحال ایک پولیس اہلکار ہلاک جبکہ 6 دیگر زخمی ہوگئے ہیں۔ زخمیوں میں ریاستی پولیس کے دو اور سینٹرل ریزرو پولیس فورس کے 3 اہلکار شامل ہیں۔ کشمیر زون کے انسپکٹر جنرل آف پولیس منیر احمد خان نے پولیس اہلکار کی ہلاکت کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ’جنگجوؤں کے حملے میں ہم نے اپنا ایک اہلکار کھو دیا ہے۔ جنگجو مخالف آپریشن جاری ہے‘۔ انتظامیہ نے احتیاطی اقدامات کے طور پر ضلع پلوامہ میں موبائیل انٹرنیٹ سروس معطل کردی ہے۔

سرکاری ذرائع نے بتایا کہ انٹرنیٹ خدمات کی معطلی کا اقدام سوشل میڈیا پر کسی بھی طرح کی افواہ بازی کو روکنے کے لئے اٹھایا گیا ہے۔ سیکورٹی ذرائع نے بتایا کہ ہفتہ کی علی الصبح قریب چار بجے دو جنگجوؤں پر مشتمل ایک بھاری مسلح گروپ نے ڈسٹرک پولیس لائنز پر حملہ کرکے اندر داخل ہونے میں کامیابی حاصل کی۔ انہوں نے بتایا کہ جنگجوؤں نے اندر داخل ہونے کے دوران اندھا دھند فائرنگ کی اور سیکورٹی فورسز کی طرف ہتھ گولے داغے۔ ذرائع نے بتایا کہ جنگجوؤں کی ابتدائی فائرنگ میں 7 سیکورٹی فورس اہلکار زخمی ہوگئے۔ انہوں نے بتایا ’زخمیوں کو پہلے ضلع اسپتال پلوامہ اور بعدازاں تشویشناک حالت میں سری نگر کے اسپتالوں میں منتقل کیا گیا ہے‘۔

جنوبی کشمیر میں ڈی پی ایل پلوامہ پر فدائین حملہ، ایک پولیس اہلکار ہلاک، 6 دیگر زخمی

ہندوستانی فوج: فائل فوٹو

پولیس ذرائع نے بتایا کہ ایک پولیس اہلکار زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گیا۔ مہلوک پولیس اہلکار کی شناخت کانسٹیبل امتیاز احمد شیخ ساکنہ قاضی کولگام کے بطور کردی گئی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ڈی پی ایل کے اندر طرفین کے مابین گولہ بارکا تبادلہ وقفے وقفے سے جاری ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ جنگجوؤں کو فرار ہونے سے روکنے کے لئے سیکورٹی فورسز کی اضافی کمک وہاں پہنچادی گئی ہے جنہوں نے ڈی پی ایل کو چاروں اطراف سے محاصرے میں لے لیا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز