ہائی کورٹ نے کھٹر حکومت کو لگائی سخت پھٹکار ، کہا :  سیاسی مفادات کیلئے ریاست کو جلنے دیا گیا

Aug 26, 2017 01:01 PM IST | Updated on: Aug 26, 2017 01:48 PM IST

چنڈی گڑھ : ڈیرہ سچا سودا کے سربراہ کے گرمیت رام رحیم کو سادھوی عصمت دری کیس میں کل ہریانہ کے پنچکولہ کی مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آئی) کی خصوصی عدالت کے قصوروار قرار دےئے جانے کے بعد بابا کے حامیوں کے ذریعہ ریاست میں بڑے پیمانے پر تشدد اور 30 سے زائد ہلاکتوں پر ہائی کورٹ نے سخت موقف اختیار کرتے ہوئے ریاست کی کھٹر سرکار کو جم کر پھٹکار لگائی ہے۔ عدالت نے کہا ہے کہ سیاسی فائدہ کیلئے ریاست کو جلنے دیا گیا۔

عدالت نے کہا کہ جب رام رحیم کے قافلہ کے لئے صرف دو گاڑیوں کی اجازت دی گئی تھی، تو سرسا سے قافلہ نکلنے وقت سینکڑوں گاڑیوں کا قافلہ کیوں نکلنے دیا گیا۔ عدالت نے سخت لہجہ میں کہا کہ سیاسی مفادات کیلئے ریاست کو جلنے دیا گیا اور وزیر اعلی نے بابا رام رحیم کے سامنے سرینڈر کردیا۔

ہائی کورٹ نے کھٹر حکومت کو لگائی سخت پھٹکار ، کہا :  سیاسی مفادات کیلئے ریاست کو جلنے دیا گیا

خیال رہے کہ گزشتہ روزبابا کو قصوروار ٹھہرائے جانے کے بعد ریاست میں بڑے پیمانے پر تشدد ہوا تھا ، جس میں تقریبا 33 افراد کی موت ہوچکی ہے۔ تاہم آج ہریانہ پولیس ، فوج اور ریپڈ ایکشن فورس کی ٹیم بابا کے سرسا میں واقع ایک چھوٹے آشرم میں داخل ہوگئی ہے اور اس کو خالی کروایا جارہا ہے ۔یہ چھوٹا آشرم مین آشرم سے تقریبا ایک کلو میٹر کے فاصلہ پر واقع ہے۔ آشرم میں خواتین اور بچوں سمیت تقریبا ایک لاکھ افراد موجود ہیں۔ آرمی اور ضلع انتظامیہ کے ذریعہ لاؤڈ اسپیکر پر اعلان کیا جارہا ہے اور حامیوں سے باہر آنے کے لئے کہا جارہا ہے ۔

ذرائع کے مطابق ڈیرہ کیمپس کا ایک نقشہ رات کو فوج فراہم کرایا گیا تھا۔ خیال رہے کہ سرسا میںڈیرہ تقریبا 1000 ایکڑ میں پھیلا ہوا ہے ، جس میں اسکول، کھیل گاؤں، اسپتال اور تھیٹر بھی شامل ہیں ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز