راہل گاندھی کا وزیر اعظم مودی پر تیکھا حملہ ، کہا : بی جے پی لوگوں کو ڈراتی ہے اور کانگریس ڈر مٹاتی ہے

Jan 11, 2017 06:22 PM IST | Updated on: Jan 11, 2017 06:34 PM IST

نئی دہلی : کانگریس کے جن ویدنا سمیلن میں راہل گاندھی نے جہاں ایک طرف نوٹ بندی کو لے کر وزیر اعظم مودی اور بی جے پی حکومت پر جم کر نشانہ سادھا ، وہیں دوسری طرف کانگریسی کارکنوں کو ڈرو مت کا نیا نعرہ بھی دیا۔ بیرون ملک سے نیا سال منا کر لوٹے راہل گاندھی اس مرتبہ پوری طرح الگ ہی انداز نظر آئے۔ راہل نے مزاقیہ انداز میں وزیر اعظم مودی اور بی جے پی کے نظریات پر تیکھا حملہ بولا ۔ راہل نے کہا کہ بی جے پی کی ہمیشہ سے سوچ ڈرانے والی رہی ہے، جبکہ کانگریس ڈر مٹانے کا کام کرتی ہے۔

پارٹی کے نائب صدر راہل گاندھی نے کانگریس کے انتخابی نشان (پنجا) کو ہر مذہب سے جوڑتے ہوئے کہا کہ شیوا جی کی تصویر میں مجھے کانگریس کا نشان نظر آتا ہے، گرو نانک جی کی تصویر میں، مہاویر میں، بودھ میں کانگریس کا نشان نظر آتا ہے ۔ راہل نے کہا کہ کانگریس کے نشان کا مطلب ہے کہ موجودہ حالات سے ڈرو مت، سامنا کرو۔ میڈیا سے بھی چٹکی لیتے ہوئے راہل نے کہا کہ انہوں نے میڈیا سے بھی کہا ہے کہ ڈریئے مت۔

راہل گاندھی کا وزیر اعظم مودی پر تیکھا حملہ ، کہا : بی جے پی لوگوں کو ڈراتی ہے اور کانگریس ڈر مٹاتی ہے

راہل گاندھی بی جے پی اور وزیراعظم کے لوک سبھا انتخابات کے درمیان کے نعرے 'کانگریس سے پاک ہندوستان پر بھی جم کر نشانہ سادھا۔ انہوں نے کہا کہ 'یہ نئے ہندوستان کی بات کرتے ہیں، ہم بیکار ہیں کیا؟ ایک ہی آدمی نئے ہندوستان کی تعمیر کرے گا ؟ باقی سب پاگل ہیں ، صرف نریندر مودی ہی سب کچھ صحیح کر سکتے ہیں؟ اس ملک نے انگریزوں کو بھگایا ہے، یہ عقل مند ملک ہے، ہم چاند تک پہنچ چکے ہیں، ہم ملک کی سچائی کو مانتے ہیں اور اس سے محبت کرتے ہیں۔

راہل گاندھی نے مزید کہا کہ بی جے پی کے نظریات ڈرانے والے رہے ہیں ، وہ سوچتے ہیں کہ وہ ڈرا کر ہندوستان میں اقتدار پر قابض رہ سکتے ہیں، بی جے پی نے نوٹ بندی ، ماؤنواز اور دہشت گردی کے نام پر ڈر پھیلایا ہے، بی جے پی کی پالیسیاں کہتی ہیں 'ڈراو، ان کا مقصد پورے ہندوستان کو ڈرانے کا ہے، جبکہ کانگریس کی ہزاروں سال پرانی سوچ کہتی ہے ڈرو مت۔ ہر حالات کا سامنا کرو، ہندوستان کے کسی شہری کو ڈرنے کی ضرورت نہیں ہے۔

کانگریس نائب صدر نے امیتابھ بچن کی فلم نمک حلال کے گانے کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ نوٹ بندی کے ذریعہ وزیر اعظم نے غریبوں کا پیسہ پھنسایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ 'رام رام جپنا، غریب کا مال اپنا، یہ سوچ ہے سوٹ بوٹ والی حکومت کی اور اسی سوچ کو ہمیں ہرانا ہے۔راہل نے مزید کہا کہ 'ہم ان سے نفرت نہیں کرتے ہیں ، ان سے غصہ نہیں ہیں ، ہم ان کے نظریات کو هرائیں گے ، ان سے ڈرنے کی ضرورت نہیں ہے۔

اپنی تقریر میں راہل گاندھی نے سووچھ بھارت مہم سے لے کر نوٹ بندی تک، ہر معاملہ پر وزیر اعظم مودی کو آڑے ہاتھوں لیا ۔ راہل نے کہا کہ نوٹ بندی وزیر اعظم کا ذاتی فیصلہ تھا، وزیر اعظم نے آر بی آئی کا مذاق اڑایا ہے، آر بی آئی گورنر کے مشورے کو نظر انداز کیا گیا، ہم نے نوٹ بندی پر عوام کی آواز اٹھائی ہے، نوٹ بندی کی کسی بھی ماہر اقتصادیات نے تعریف نہیں کی ۔ انہوں نے مزید کہا کہ بی جے پی نے آئینی اداروں کو کمزور کیا ہے، ہمیں 70 سال کا حساب دینے کی ضرورت نہیں ہے، کانگریس نے ملک کے لئے قربانیاں دی ہیں۔

راہل نے اپنا حملہ جاری رکھتے ہوئے کہا کہ وزیر اعظم چار دن میں سووچھ بھارت مہم بھول گئے ، ہندوستان کی معیشت کی ریڑھ کی ہڈی کو انہوں نے توڑ دیا، نوٹ بندی ایک بہانا ہے، مودی جی کو پتہ لگ رہا ہے کہ یوگا، اسکل انڈیا اور میک ان انڈیا کے پیچھے وہ چھپ نہیں پائیں گے، دو ڈھائی سال قبل مودی نے سووچھ بھارت کی بات کہی، یہ ڈراما کچھ دن چلا، پھر میک ان انڈیا اور اسکل انڈیا آیا، بی جے پی اور ہم میں فرق نظر آ جاتا ہے، مودی جی نے جھاڑو غلط پکڑی تھی۔

راہل نے کہا کہ وزیر اعظم میک ان انڈیا پروگرام چلاتے ہیں اور آج آٹوموبائل سیکٹر 60  فیصد نیچے چلا گیا ۔ ہم نے 70 سال میں آر بی آئی کی اور عدالت کی عزت کی، پریس کی عزت کی، آپ نے کسی کو پوچھے بغیر کسی کو بتائے بغیر جیب کا پیسہ کاغذ بنا دیا، اب ملک کو صرف نریندر مودی اور موہن بھاگوت چلائیں گے، ہم ملک کے اداروں کو بچا کر رکھیں گے، ہم مودی جی کی سوچ کی مخالفت کرتے ہیں اور ہم ان کو شکست دے کر رہیں گے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز