رامجس تنازعہ : اے بی وی پی کی ترنگا یاترا ، کانگریس نے کہا : اے بی وی پی کے ڈی این اے میں تشدد

اے بی وی پی کے خلاف محاذ کھولنے والی کارگل شہید کیپٹن منديپ سنگھ کی بیٹی گرمیهر کور نے دہلی خواتین کمیشن میں اے بی وی پی سے وابستہ طالب علموں کی شکایت کی ہے

Feb 27, 2017 04:59 PM IST | Updated on: Feb 27, 2017 04:59 PM IST

نئی دہلی : دہلی کے رامجس کالج میں تشدد کا معاملہ لگاتار سرخیوں ہے۔ سوشل میڈیا پر بھی اسے لے کر کافی بحث ہو رہی ہے۔ ایک طرف جہاں اکھل بھارتیہ ودیارتھی پریشد کے طلبہ یونیورسٹی میں ترنگا یاترا نکال رہے ہیں ، وہیں دوسری طرف اے بی وی پی کے خلاف محاذ کھولنے والی کارگل شہید کیپٹن منديپ سنگھ کی بیٹی گرمیهر کور نے دہلی خواتین کمیشن میں اے بی وی پی سے وابستہ طالب علموں کی شکایت کی ہے۔ گرمیہر نے طلبہ پر دھمکی دینے اور بدسلوکی کرنے کا الزام عائد کیا ہے۔ یونیورسٹی میں کسی بھی ٹکراو سے بچنے کیلئے کثیر تعداد میں پولیس اہلکاروں کو تعینات کر دیا گیا ہے۔

اے بی وی پی سے وابستہ طلبہ دہلی یونیورسٹی کے نارتھ کیمپس میں ترنگا یاترا نکال رہے ہیں۔ یاترا کے دوران نعرے لگائے جارہے ہیں کہ ملک میں رہنا ہے ، تو وندے ماترم کہنا ہے۔ اپنے اس ترنگا یاترا پر اے بی وی پی کا کہنا ہے کہ آپ اس کو سیاست نہ کہیں ،بلکہ حب الوطنی کہیں ۔ ہم دکھانا چاہتے ہیں کہ ترنگے کے نیچے سارے لوگ ہیں ، ہم ان کو کس طرح آزاد کر دیں۔جبکہ این ایس یو آئی کی صدر امرتا دھون کا کہنا ہے کہ اے بی وی پی کی ترنگا یاترا نقلی ہے۔ ان لوگوں نے 52 سال تک اپنے آفس میں ترنگا نہیں لگایا، یہ جان بوجھ کر یونیورسٹی کا ماحول خراب کررہے ہیں۔ امرتا دھون نے ساتھ ہی ساتھ سلیبرٹيزسے بھی اس معاملہ سے دور ہی رہنے کی اپیل کی ۔ انہوں نے کہا کہ سہواگ ہوں یا ہڈا ،ان کو اس طرح کے سنجیدہ مسائل پر تبصرہ نہیں کرنا چاہئے۔

رامجس تنازعہ : اے بی وی پی کی ترنگا یاترا ، کانگریس نے کہا : اے بی وی پی کے ڈی این اے میں تشدد

ادھر رامجس کالج کے پرنسپل راجندر پرساد نے سی این نیوز 18 سے بات چیت میں کرتے ہوئے کہا کہ مجھے طالب علموں کے ترنگا یاترا کی کوئی معلومات نہیں ہے۔ میں طالب علموں سے اپیل کرتا ہوں کہ بیٹھیں اور بات کریں۔ میں کہنا چاہتا ہوں کہ اس طرح سے یہ معاملہ ہر فریق کو متاثر کرے گا۔

والد کی طرح گولی کھانے کیلئے تیارہوں : گرمیہر

Loading...

رامجس کالج میں تشدد کے خلاف سوشل میڈیا پر مہم چلانے والی گرمیهر کور نے پھر کہا ہے کہ وہ اظہار رائے کی آزادی کی حمایت کرتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ 'میں اپنے ملک سے محبت کرتی ہوں اور اپنے ہم جماعتوں سے بھی۔ میں ان کے اظہار رائے کے حق کی حمایت کرتی ہوں۔ پر' تشدد جھڑپوں کو لے کر ایک بار پھر اے بی وی پی کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کور نے کہا کہ اے بی وی پی یا کوئی بھی طلبہ تنظیم ہو، کسی کو حق نہیں ہے کہ وہ قانون اپنے ہاتھ میں لے۔ عمر خالد پر پتھر نہیں پھینکے گئے تھے ، کیونکہ وہ تو وہاں تھا ہی نہیں، پتھر ان طلبہ پر پھینکے گئے جو وہاں موجود تھے۔

ہر سرگرمی پر گہری نگاہ : راج ناتھ

بنارس میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے رامجس معاملہ پر کہا کہ میں دہلی پولیس سے مسلسل رابطے میں ہوں۔ میں نے دہلی پولیس کو بڑی ہی احتیاط کے ساتھ حالات سے نمٹنے کے لئے کہا ہے۔

رامجس کالج میں تشدد کے لئے مودی ذمہ دار : کانگریس

کانگریس نے دہلی یونیورسٹی کے رامجس کالج میں تشدد کے لئے وزیر اعظم مودی کو ذمہ دار ٹھہراتے ہوئے کہا کہ اے بی وی پی کو آر ایس ایس کی حمایت حاصل ہے اور تشدد سنگھ پریوار کے خون میں ہے۔ کانگریس کے ترجمان منیش تیواری نے پارٹی ہیڈکوارٹر میں ایک پریس کانفرنس میں الزام لگایا کہ ودیارتھی پریشد ہر جگہ لوگوں اور طلبہ کو ڈرانے دھمکانے کی کوشش کر رہی ہے۔ ملک کی تمام یونیورسٹیوں میں ایک جیسا تشدد ہو رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ' ودیارتھی پریشد کو سنگھ کی حمایت حاصل ہے اور تشدد ان کے ڈی این اے میں ہے۔ کانگریس نے کہا کہ نارتھ کیمپس میں ہوئے تشدد کی غیرجانبدارانہ تفتیش کرائی جانی چاہئے اور قصورواروں کو سخت سزا دی جانی چاہئے۔

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز