اترپردیش : وزیر اعلی کی دوڑ میں راج ناتھ سنگھ سب سے آگے ، پسماندہ اور دلت طبقہ سے بنائے جا سکتے ہیں دو نائب وزیر اعلی

ذرائع کے مطابق مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ وزیر اعلی کی دوڑ میں سب سے آگے ہیں ۔ لیکن آر ایس ایس چاہتا ہے کہ پسماندہ اور دلت طبقہ کو بھی ناراض نہیں کیا جانا چاہئے ۔

Mar 15, 2017 09:18 AM IST | Updated on: Mar 15, 2017 09:18 AM IST

لکھنو : اتر پردیش اسمبلی انتخابات میں واضح اکثریت ملنے کے بعد بی جے پی اعلی کمان اب ریاست کے نئے وزیر اعلی کے انتخاب میں مصروف ہے ۔  ذرائع کے مطابق مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ وزیر اعلی کی دوڑ میں سب سے آگے ہیں ۔ لیکن آر ایس ایس چاہتا ہے کہ پسماندہ اور دلت طبقہ کو بھی ناراض نہیں کیا جانا چاہئے ۔ لہذا توازن برقرار رکھںے کے لئے پسماندہ اور دلت طبقہ سے ایک ایک نائب وزیر اعلی بھی بنائے جا سکتے ہیں ۔

ویسے یہ بھی کہا یہ بھی جا رہا ہے کہ یوپی کا وزیر اعلی کون ہوگا ، اس پر فیصلہ 20 مارچ سے پہلے ہونے کا امکان کم ہی نظر آرہا ہے ۔ سولہ مارچ کو یوپی ممبران اسمبلی اور مبصرین کی میٹنگ ہونے والی ہے، لیکن اس دوران آر ایس ایس کی میٹنگ 17 سے 19 مارچ تک كوئمبٹور میں ہونی ہے ۔ لہذا اس دوران آر ایس ایس کی رائے کے بغیر وزیر اعلی کے نام پر اتفاق رائے ہونے کا امکان کم ہی نظر آرہا ہے ۔

اترپردیش : وزیر اعلی کی دوڑ میں راج ناتھ سنگھ سب سے آگے ، پسماندہ اور دلت طبقہ سے بنائے جا سکتے ہیں دو نائب وزیر اعلی

راج ناتھ سنگھ کے علاوہ ڈاکٹر مہیش شرما ، کیشو پرساد موریہ ، ڈاکٹر دنیش شرما ، سوتنتر دیو سنگھ ، ستیش مہانا اور منوج سنہا بھی وزیر اعلی کی دوڑ میں ہیں ۔ تاہم مہیش شرما نے خود کو ریس سے الگ بتاتے ہوئے کہا کہ راج ناتھ سنگھ وزیر اعلی کے لئے سب سے زیادہ مناسب چہرہ ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ پارلیمانی بورڈ کے اجلاس میں ان کے نام پر کوئی بحث نہیں ہوئی ۔

واضح رہے کہ اترپردیش اسمبلی انتخابات میں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کو واضح اکثریت ملی ہے ۔ پارٹی نے 403 سیٹوں میں سے 312 نشستوں پر کامیابی حاصل کی  ہے ۔ حکمراں سماج وادی پارٹی  کے ساتھ بہوجن سماج پارٹی  بھی حاشیہ پر آ گئی ۔  بی جے پی نے 312 سیٹوں پر جیت حاصل کی ہے ، وہیں بی ایس پی کو 19، ایس پی کو 47 اور کانگریس کو محض 7 نشستوں پر کامیابی ملی ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز