اجین ٹرین بم دھماکہ اور لکھنو انکاونٹر پر پارلیمنٹ میں راجناتھ سنگھ کا بیان ، کہا : سیف اللہ کے والد پر فخر ہے

Mar 09, 2017 01:35 PM IST | Updated on: Mar 09, 2017 01:35 PM IST

نئی دہلی : مدھیہ پردیش میں بھوپال-اجین مسافر ٹرین دھماکہ اور لکھنؤ انکاؤنٹر پر وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے آج راجناتھ سنگھ نے بیان دیا ۔ اپنے بیان میں راجناتھ سنگھ نے کہا کہ مدھیہ پردیش میں بھوپال-اجین مسافر ٹرین میں دھماکہ ہوا، جس میں 10 افراد زخمی ہوئے۔ نامعلوم ملزموں کے خلاف رپورٹ درج کر لی گئی ہے۔ ابتدائی جانچ سے پتہ چلا ہے کہ دھماکہ خیز مواد کے لئے آئی ای ڈی کا استعمال کیا گیا۔ جانچ کے لئے مرکزی ایجنسیوں سے رابطہ کیا گیا ہے۔ اس سلسلہ میں اب تک تین مشتبہ افراد کو گرفتار کیا گیا۔

وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ نے مزید کہا کہ تفتیش کی بنیاد پر یوپی میں چھاپہ ماری کی گئی ۔ اس کے بعد سیکورٹی اہلکاروں کو سیف اللہ کی اطلاع ملی۔ سیف اللہ کو گرفتار کرنے کی کوشش کی گئی، لیکن اس نے ہتھیار ڈالنے سے انکار کردیا اور اے ٹی ایس پر فائرنگ شروع کر دی۔ کئی گھنٹوں کے انکاونٹر کے بعد سیف اللہ کو مار گرایا گیا۔ اے ٹی ایس نے کانپور سے بھی ایک مشتبہ شخص کو گرفتار کیا ہے۔ اس پورے واقعہ میں اب تک چھ گرفتاریاں ہوئی ہیں۔ مدھیہ پردیش اور اتر پردیش نے تیزی سے کارروائی کی۔ اس پورے معاملہ کی جانچ این آئی اے کے سپرد کر دی گئی ہے۔

اجین ٹرین بم دھماکہ اور لکھنو انکاونٹر پر پارلیمنٹ میں راجناتھ سنگھ کا بیان ، کہا : سیف اللہ کے والد پر فخر ہے

راج ناتھ سنگھ نے ایوان میں سیف اللہ کے والد محمد سرتاج کے بیان کا بھی ذکر کیا۔ انہوں نے کہا کہ سرتاج نے کہا کہ جو ملک کا نہ ہوا وہ میرا کیسے ہو سکتا ہے، اس نے کوئی صحیح کام تو نہیں کیا، مجھے اس کا منہ نہیں دیکھنا، سیف اللہ نے مجھے شرمندہ کر دیا، ہر کسی کے لئے ملک سے پہلے ہے، لیکن سیف اللہ کے لئے نہیں، جو ملک کا نہیں، وہ میرا کیا ہوگا۔راجناتھ نے کہا کہ میں اور پورا ایوان سیف اللہ کے والد کے تئیں ہمدردی کا اظہار کرتا ہے۔ بیٹے کی غدار حرکتوں کی وجہ سے انہیں اپنے بیٹے کو کھونا پڑا۔ حکومت اور پورے ایوان کو محمد سرتاج پر فخر ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز